The Latest

وحدت نیوز(اسلام آباد) قاضی عبدالصبور ہاشمی جنرل سیکرٹری پاکستان فلاح پارٹی راولپنڈی ڈویژن نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ روز مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سالانہ اجلاس منعقدہ امام بارگاہ الصادق اسلام آباد میں شرکت کا موقع ملا۔ بہت ہی عمدہ منظم اجتماع تھا جس میں وطن عزیز کے تمام مکاتب فکر کے جید زعما موجود تھے۔اس موقع پر مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی انتخابات منعقد ہوئے جن میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری صاحب کو آئندہ تین سال کے لیے چئیرمن مجلس وحدت مسلمین پاکستان منتخب کیا گیا۔ حلف برداری ہوئی اس کے بعد تمام مکاتب فکر کے جید علما و زعما نے اظہار خیال کیا۔

انہوں نے کہا کہ ملک بھر سے آئے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے کارکنان کا جوش و جذبہ دیدنی تھا ۔اس موقع پر میرے لیے سب سے اہم بات تھی وہ تمام حاضرین اور خصوصاً مقررین کا وطن عزیز سے محبت کا جذبہ اور ملت پاکستان سے وفاداری کا جوش اور وطن عزیز سے فرقہ واریت کو نابود کر کے وحدت کو فروغ دینا کا بے مثال جذبہ تھا۔ اس سے بھی کہیں اہم استعمار اور طاغوت کی قوتوں کے خلاف یکجا ہونے کا تجدید عہد تھا۔خدائے متعال و لم یزل استقامت عطا فرمائے۔

وحدت نیوز(آرٹیکل) پاکستان کے معروضی حالات میں مجلس وحدت مسلمین پاکستان نے شب وروز کوشش کرکے نہ صرف اپنی جگہ بنائی بلکہ اپنی طاقت کو بھی منوایا ہے کسی بھی شیعہ مذہبی سیاسی جماعت کی اب تک پاکستان میں ہونے والی سیاست سے زیادہ بڑھ چڑھ کر کردار ادا کیا اگر میں یہ بھی کہہ دو تو مبالغہ نہیں ہوگا کہ مجلس وحدت مسلمین نے جو مذہبی و سیاسی کردار اب تک پاکستان میں ادا کیا ہے اس سے پہلے کوئی مذہبی جماعت ادا نہیں کر سکی تھی۔

مجھے یاد ہے ابھی کل ہی کی بات ہےپاکستان کے گلی کوچوں میں ملت جعفریہ کا خون بہایا جارہا تھا ہر طرف وطن عزیز میں کافر کافر شیعہ کافر کا نعرہ بلند کیا جا رہا تھا ستم ظریفی تو یہ ہے کہ شیعوں سے کہا جا رہا تھا یا مسلمان ہو جاؤ یا جزیہ دو یا پاکستان چھوڑ دو۔

افسوس کی بات تھی کہ ان دہشت گرد اور تکفیری گروہوں کے سامنے ریاست بے بس نظر آ رہی تھی اور یہ بھی حقیقت ہے کہ ملت جعفریہ کے افراد نقل مکانی کر رہے تھےعزاداری پر حملے ہو رہے تھے ایک ایک دھماکے میں سینکڑوں قربانیوں کے باوجود ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ بھی جاری تھا مجھے نہیں یاد پاکستان کا کوئی علاقہ اس دہشت گردی سے محفوظ رہاہو پارہ چنار کا محاصرہ ان پر عرصہ حیات تنگ کیے ہوئے تھا بے بسی کا یہ عالم تھا کہ حکومت آل پارٹیز کانفرنس بلاتی ہے کہ طالبان سے مذاکرات کیے جائیں لیکن طالبان کے ظلم کا سب سے زیادہ شکار ہونے والی ملت جعفریہ کو اس میٹنگ میں نمائندگی نہ دی گئی یعنی تکفیری گروہ اس حد تک منظم ہو چکے تھے اور دہشتگردی سرعام تھی اور پاکستان میں اسلام آباد پر قبضہ کرنے کی تاریخیں دی جا رہی تھی ایسے پر آشوب حالات میں ایک مرد مجاہد د مثل مختار میدان میں آیا اور ملت جعفریہ کے حقوق کےتحفظ کا اعلان کیا اور عملی جدوجہد کا آغاز کیا آپ نے اعلان کیا کہ بلاتحقیق جو بھی علی ولی اللہ پڑھنے والا ھے ان کی جماعت مجلس وحدت مسلمین پاکستان کا حصہ ہے اس کے حقوق اور اس کا تحفظ ان کی ذمہ داری ہے۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری اور ان کے رفقاء کے اخلاص کی وجہ سے ملت جعفریہ نے ان کی قیادت پر اعتماد کا اظہار کر دیا اور اس جدوجہد میں ان کا بھرپور ساتھ دینے کا اعلان کیا پھر ایسا ہوا کہ مجلس کی بہترین حکمت عملی کی وجہ سے نواب رئیسانی کی بلوچستان حکومت کو گھر جانا پڑا پاراچنار کا محاصرہ ختم کرنا پڑا شیعہ دشمنی پر مبنی نیٹ ورک کو ٹوٹناپڑا اور مختصر سی مدت میں دیوار سے لگی ہوئی ملت جعفریہ کو میدان میں لا کھڑا کیا اور ایک طاقتور قوم کا سفر شروع کیادیکھتے ہی دیکھتے مجلس وحدت مسلمین بام عروج پر پہنچ گئی سیاسی حکمت عملی میں بھی پیچھے نہ رہی بلو چستان حکومت ھو پنجاب ہو گلگت بلتستان ہو پا را چنار ہو ہر جگہ شاندار سیاسی کردار ادا کرکے اسمبلیوں تک رسائی حاصل کی اور ملت کے مسائل کو اسمبلیوں کے فلور پر پیش کیا۔

آپ نے ہمیشہ مظلوم کی بات کی اور کہا کہ ہم ہر مظلوم کے ساتھ ہیں اور ہر ظالم کے مخالف ہیں ہم پاکستانیوں کے ساتھ کسی قسم کی زیادتی نہیں ہونے دیں گے پاکستان میں اقلیتوں کو بھی تحفظ دیں گے اور ان کے حقوق کی بھی جدوجہد کرتے رہیں گے۔

ایسا رہبر ایسا قائد جس نے اپنے قول و فعل سے ثابت کردیا کہ وہ ہر عوامی مسائل میں ان کے ساتھ کھڑا ہے ایک مضبوط آواز نہ جھکنے والی نہ بکنے والی جدوجہد کی وہ لازوال داستان جو ایک مضمون میں مکمل نہیں کی جا سکتی آج جب سنا کہ آئندہ تین سال کے لیے دوبارہ سر براہ مجلس وحدت مسلمین کی حیثیت سے منتخب کرلیا گیا ہے تو ایک لمحہ کے لئے ان کے گزشتہ ادوار نظر میں آ گئے اور میں سوچ رہا تھا کہ علامہ عارف حسین الحسینی کے بعد ملت جعفریہ کی حقیقی نمائندگی کس نے کی ہے تو وہ علامہ ناصر عباس جعفری صاحب ہیں۔

عزاداری کے تحفظ کی ڈھال بنا ہے تو راجہ ناصر عباس جعفری
مسنگ پرسنز کی بات ہو تو سب سے آگے ہیں راجہ ناصر عباس جعفری
قومی مسائل کی نشاندہی کرنی ہو تو راجہ ناصر عباس جعفری
قومی مسائل کی تشخیص بتانی ہو تو علامہ راجا ناصر عباس جعفری
انٹرنیشنل سطح پر مسلمانوں کے خلاف ہونے والی ہر سازش کو بے نقاب کرنا ہو تو راجہ ناصر عباس جعفری
حرمت رسول اللہ و آل محمد کا مسئلہ ہو تو سینہ سپر راجہ ناصر عباس جعفری
ملک دشمنوں کو بے نقاب کرنا حب الوطنی کا درس دینا مادر وطن کے ساتھ وفا کرنا سامراجی ایجنٹوں اور دشمن وطن قوتوں کو للکارنا حق کے ساتھ اور باطل کے مقابل کھڑے ہونا راجہ ناصر عباس جعفری ہی کا کام ہے

لیکن افسوس ملت جعفریہ آج بھی غفلت کا شکار ہے اور آج تک شہید حسینی کی شہادت پر کف افسوس ملنے والی قوم متبادل حسینی کا وہ حق ادا نہ کر سکی جو کرنا چاہیے تھا یقین رکھو راجہ ناصر عباس جعفری تمہاری جنگ لڑ رہا ہے تمہارے تحفظ کے لئے تمہارے حقوق کے لیے تمہاری خوشحالی اور ترقی کے لئے ان لمحوں کو غنیمت جانو اور راجہ ناصر عباس جعفری کا ہاتھ مضبوط کرو۔
عوامی بالادستی کی بات ہو تو آواز اٹھائے راجہ ناصر عباس جعفری
مظلوم کی حمایت اور ظالم کی مخالفت کا معاملہ ہو تو تو راجہ ناصر عباس جعفری
فلسطین کے مظلوموں کے حقوق کی بات کرے تو راجہ ناصر عباس جعفری
بحرین اور یمن کے مظلوموں کی آواز بنے تو راجہ ناصر عباس جعفری
پاکستان میں انصاف کی بالادستی کے لیے برسرپیکار راجہ ناصر عباس جعفری
بیروزگاری بھوک اور افلاس کے خاتمہ کی جدوجہد راجہ ناصر عباس جعفری
تکفیری ٹولوں کو بے نقاب کرے راجہ ناصر عباس جعفری

شیعہ سنی وحدت کی مضبوط آواز بلند کرنا،اگر دنیا میں سر اٹھا کر چلنا چاہتے ہوغیرت مندوں والی زندگی گزارنا چاہتے ہو بہادروں کی طرح اپنا ذکر چاہتے ہو تو اس جری شجا مثل مختار مقاومت کا ستون راجہ ناصر عباس جعفری کے پیچھے کھڑے ہو جاؤ۔

ملت کے اتحاد کا جتنا یہ خواہشمند ہے پاکستان میں کوئی نہیں ۔خدا آپ کا رتبہ سلامت رکھے قوم کی عزت صحت اور طاقت میں اضافہ ہوگا تو ملت کے بزرگوں بچوں کی عزت میں اضافہ ہوگا  اے قائدوحدت ھم تیرے ساتھ ہیں کندھے سے کندھا ملا کر اور تیری آواز پر لبیک کہتے ہیں اور آپ کی درازی عمر کی دعا کرتے ہیں۔

تحریر: ڈاکٹر سید افتخار حسین نقوی (فیصل آباد)

وحدت نیوز(آرٹیکل)15 مئی 2022 اسلام آباد کی خوبصورت فضاؤں میں گزشتہ چند روز کی گرم ہواؤں کو مالک نے بادل کے سائبان سے حدت کی کمی کا سامان کیا ہی تھا کہ بارش کے ننھے قطروں نے اٹھتی گرد کو زمین پر بچھا دیا، ٹھنڈی ہوا بشری بن کر موسم کو خوشگوار بنا چکی تھی، برادرم اقرار ملک کی خوش امتزاج اہتمام میں برادر عزیز بزرگ سید اسد عباس نقوی اسٹیج کو وحدت مسلمین کا عملی گلدستہ بنا چکے تھے،میرے سمیت سینکڑوں افراد منتظر تھے کب وہ گھڑی آئے جس کے انتظار میں جب سٹیج پر کسی کو بلایا جاتا تو ❤️ دل کی دھڑکنیں تیز ہو جاتیں،جب سب سے پہلے حجۃالاسلام والمسلمین علامہ شیخ صلاح الدین سربراہ شوری عالی مجلس وحدت مسلمین پاکستان کو سٹیج پر بلایا گیا تو دل ہاتھوں پر آنے کو تھا، ساتھ ہی عالم باعمل پیکر اخلاص و محبت آقائی السید احمد اقبال رضوی حفظہ اللہ کو سٹیج کی دعوت دی گئی اور پھر سٹیج سجنے لگا لمحوں میں محترم جناب لیاقت بلوچ نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان،محترم صاحبزادہ ابوالخیر زبیر سربراہ ملی یکجہتی کونسل پاکستان،محترم مفتی علامہ پیر سید ضیاء اللّٰہ شاہ بخاری سربراہ جمیعت اہلحدیث پاکستان، محترم مفتی گلزار نعیمی سربراہ جماعت اہل حرم پاکستان،نفیس و مشفق تہور ومقاوم برادرم سید ناصر عباس شیرازی،برادر میثم کاظم ،برادر آغا مزمل حسین فصیح ودیگر اکابرین جلوہ فگن تھے روح حضرت علامہ اقبال شاد تھی،جن کی آرزو  "ایک ہوں مسلم حرم کی پاسبانی کے لئے" کی عملی تصویر وحدت مسلمین کانفرنس کا اسٹیج جامع امام صادق جی نائن اسلام آباد کی روح افزاء مقام پر پیش کر رہا تھا،پھر وہ لمحہ بھی آیا کہ آقائے صلاح الدین دام ظلہ کی بات ابھی اس مرحلہ پر ہی پہنچی تھی !
"
نئے چیرمین علامہ۔۔۔۔۔۔۔۔۔راجہ۔۔۔۔۔
"
پھر ہر طرف سے صدا بلند ہوئی ۔۔۔۔
لبیک یاحسین لبیک یا حسین ۔۔۔۔۔
گویا پورا نام سننے کا تحمل بھی نا ہوا۔۔۔
میں سوچ میں گم ہو گیا ،
یہ جوش یہ خوشی کیونکر آئی۔۔۔۔۔
آخر اس قلندر مزاج نے کیسے تسخیر کر لیا؛ کراچی سے خیبر تفتان سے خنجراب؛
ملک خدا داد کے کونے کونے سے آئے یتیمان آل محمد کی یہ صدائے لبیک اخلاص کی غماز حوصلوں کی جولان ارادوں کی چٹان صفحات اذہان پر تجدید عھد کے نقوش مرقوم کر رہی تھی،گذشتہ شب تقسیم اعزازات کے دوران برادر ناصر شیرازی کی ناصر ملت سے شیلڈ وصول کرتے ہوئے سرگوشی"ہم آپ کے اچھے سپاہی ثابت نہیں ہوئے"
(' ناصر ملت کی آنکھوں میں نمی اور پدرانہ بوسہ ')دور بیٹھ کر سنائی اور دکھائی دے گیا کیونکہ شاید سب کارکنوں کی طرف سے اظہارِ حقیقت تھا،
آج یہ جوش و ولولہ روشن مستقبل کی غمازی کر رہا تھا۔
وہ مرد آہن جو گرتی لاشوں،ناامید قوم،مایوس ملت کی قیادت اس وقت سنبھال رہا تھا،جب نہ صرف بیٹوں کی لاشیں ماؤں کو تحفہ میں دی جارہی تھیں بلکہ اعضاء جسم ٹکڑے ہوتے دردناک لمحات کو فلم بند کر کے جگر پارہ پارہ کرنے کا سامان باہم کیا جا رہا تھا،ہمارا لہو ارزان،ہماری جانیں سبک، ہماری حثیت بے قیمت،ہمارا وجود عدم ،ہمارا نور ظلمت سے بدل دیا گیا تھا،
خالق نے یوم نداولھا بین الناس عملی کیا ،مجلس اٹھی،سالار مجلس چلا نہ شب دیکھی نہ دن ، ایک ہی دھن۔۔۔۔
اقبال اور قائد کا پاکستان۔۔۔۔۔
مسلم پاکستان۔۔۔۔
مولوی سے ملنگ ۔۔۔۔ایک ہی صف
مجلس وحدت مجلس وحدت
مومنین کو جوڑا۔۔۔۔
مسلمانوں کو متحد کیا جسکا اقرار
ناصر ملت کا خطاب شروع ہونے تک ہر خطیب وحدتِ مسلمین کانفرنس اقتباس ناصر ملت کی شخصیت سے لیتا رہا،سخت طوفان کے باوجود کانفرنس کا جاری رہنا  
کارکنان کا دیدنی جوش قائم رہنا اپنے باوفا لیڈر سے وفا کا منہ بولتا ثبوت تھا
حب الوطنی کا مرقع خطاب تمام استکبار و استعمار و طواغیت کے لیے للکار تھا۔
محبان وطن کے لیے اعلان ولایت و بشارت تھا کہ یہ سفر نور وجود وجہہ وجود عالم بقیۃ اللّٰہ الاعظم عج کے ظہور تک جاری رہے گا۔۔۔۔
مستضعفین کی حمایت کا سفر۔۔۔۔
وطن سے وفا داری کا سفر۔۔۔۔
مقاومت کا سفر۔۔۔۔
حریت کا سفر۔۔۔۔۔۔
وحدت کاسفر۔۔۔۔۔
تصور جناح کا سفر۔۔۔۔
خوابِ اقبال کا سفر۔۔۔۔۔
رہبر کی امیدوں کا سفر ۔۔۔
مولا کے ظہور کا سفر یعنی
ظلمت سے نور کاسفر ۔۔۔۔۔
مجلسِ وحدت مسلمین پاکستان کا سفر۔۔۔۔

تحریر: السید حسن رضا ہمدانی مدرسہ حضرت عمار یاسر حیدر روڈ راناٹاؤن،کالا شاہ کاکو

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے تین روزہ مرکزی راہیان کربلا کنونشن کے آخری روز نئے پارٹی چیئرمین کے علاوہ شوریٰ عالی (سپریم کونسل) کے 7 نئے اراکین کا انتخاب بھی عمل میں لایا گیا۔

اراکین شوریٰ عمومی نے خفیہ رائے شماری کے نتیجے میں ملک کے مختلف صوبوں سے تعلق رکھنے والے 4 علمائے کرام اور 3 ٹیکنوکریٹس کو آئندہ تین سال کیلئے کثرت رائےسےرکن شوریٰ عالی منتخب کیا۔

نومنتخب اراکین شوریٰ عالی میں پنجاب سے علامہ عبد الخالق اسدی، سندھ سے علامہ مختار احمد امامی، گلگت سے علامہ شیخ نیئرعباس مصطفویٰ اور اسلام آباد سےمولانا پروفیسر سید امتیازعلی رضوی شامل ہیں۔

جبکہ 4 منتخب ٹیکنوکریٹس میں سےسکردو سے کاچوزاہد علی خان ،اسلام آباد سے نثارعلی فیضی اور پشاور سےقاسم رضا بنگش کو رکن شوریٰ عالی منتخب کیا گیا۔

واضح رہے کہ ایم ڈبلیوایم کے اعلیٰ اختیاراتی ادارے شوریٰ عالی کل 21 اراکین پر مشتمل ہے جس میں 14 علمائے کرام اور 7 ٹیکنو کریٹس شامل ہیں۔ اس سال علامہ حسن ظفر نقوی، علامہ حیدر عباس عابدی ،علامہ حیدر علی جوادی،علامہ ہاشم موسوی ،برادر عارف قمبری اوربرادر اکبر موسوی کی مدت مسئولیت کے اختتام پر نئے اراکین کا انتخاب عمل میں لایا گیا ہے ۔

ملک بھر سے ایم ڈبلیوایم کے مرکزی ، صوبائی، ڈویژنل اور ضلعی رہنماؤں نے نو منتخب اراکین شوریٰ کو انتخاب پر مبارک پیش کی ہےاور ان کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد)مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے چیئرمین علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے ولایت و امامت کے چھٹے تاجدار حضرت امام جعفر صادق علیہ السلام کے یوم شہادت کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ امام برحق نےجس عظیم علمی و فکری تحریک کی بنیاد ڈالی  آج سارا  عالم انسانیت اس سے استفادہ کر رہا ہے۔جو قومیں اہل بیت اطہار علیہم السلام کی تعلیمات  پر حقیقی معنوں میں عمل کر رہی ہیں وہ آج دنیا بھر کے سامنے سرخرو اور سربلند  ہیں ۔آل محمد  صلی اللہ علیہ والہ وسلم  سے محبت کا تقاضا ہے کہ ان کے احکامات  پر من و عن عمل کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ چھٹے امام ؑ کے دور میں اسلامی افکار و نظریات کی ترویج  اور علمی بحث و مباحثوں سے اہل بیت اطہار علیہم السلام کی تعلیمات کو فروغ حاصل ہوا۔ اختلاف رائے  پر عدم برداشت کا رویہ مثبت بحث مباحثہ کے راہ کی دیوار بن جاتا ہے۔ آئمہ اطہار علیہم السلام نے دین حقہ کی ترویج و تبلیغ کے لیے جو طرز عمل اختیارکیا موجودہ دور میں اس کی شدت سے ضرورت ہے۔امام جعفر صادق علیہ السلام اپنے دور کی طاغوتی طاقتوں کے سامنے خاموش نہیں رہے بلکہ ظالموں کے ہر ظلم سے عوام کو آگاہ کرتے رہے۔ان کی بلند سیرت اور اخلاقی کمالات کا اعتراف ان کے مخالفین کو بھی تھا۔اگر ہم دنیا وآخرت میں سرخروی حاصل کرنا چاہتے ہیں تو اہل بیت ؑ کے سیرت و کردار کو مشعل راہ بنانا ہو گا۔

وحدت نیوز (لاہور) حالیہ دہشت گردی کے واقعات پر معصوم جانوں کے ضیاع پر اظہار افسوس کرتے ہوئےمرکزی صدر مجلس وحدت مسلمین شعبہ خواتین و رکن پنجاب اسمبلی محترمہ سیدہ زہرا نقوی نے اپنے ایک پیغام میں کہا کہ وطن عزیز سنگین ترین دور سے گزرا رہا ہے ایک ماہ میں دہشت گردی کے تین واقعات سے معلوم ہوتا ہے کہ ملک دشمن عناصر منظم انداز میں دہشت گردی کے ذریعے ملک کو کمزور کرنا چاہ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کسی بھی ملک کے عوام کی جان و مال کی حفاظت ریاستی اداروں کی اولین ذمہ داری ہے ان واقعات کے خاتمے کے لیے دہشت گردوں سے آہنی ہاتھوں سے نمٹنا ضروری ہے ملک پاکستان کو اس وقت بے شمار سنگین مسائل اور دشوار ترین حالات کا سامنا ہے ایسے میں دہشت گردی کے پے در پے واقعات نہایت تشویشناک ہیں ۔

انہوں نے مذید کہا کہ پاکستان کی سالمیت و بقا اور عوام کی حفاظت کے لیے ریاست کو سنجیدگی سے ان دہشت گردانہ واقعات کی روک تھام کے لیے سخت اقدامات اٹھانے ہونگے اور قاتلوں کو انصاف کے کٹہرے میں پیش کرنا ہوگا۔

سیدہ زہرا نقوی نے میرانشاہ میں خودکش حملے کے نتیجے میں تین سیکورٹی اہلکار اور بچوں کی ہلاکت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ملک میں جاری دہشت گردی کی نئی لہر پر توجہ دینے کی ضرورت ہے اور اس کے اسباب کو جاننے کی ضرورت ہے ہماری بہادر فوج نے ہمیشہ کی طرح اپنی جانوں کی پرواہ نہ کرتے ہوئے عام لوگوں کے تحفظ کو یقینی بنانے کے لیے کام کیا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دہشت گردی کی لہر نے ایک بار پھر وطن عزیز کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے ۔ کئی سال قبل دہشت گردی کے خلاف شروع ہونیوالے ملک گیر اور غیر معمولی آپریشن کے بعد بھی دہشت گردوں کا مکمل صفایا نہیں ہو سکا ہے اور وہ آج بھی اپنی مذموم کارروائیاں کر رہے ہیں ۔ اس صورتحال کا ازسر نو جائزہ لینے اور نئی حکمت عملی وضع کرنے کی ضرورت ہے ۔

وحدت نیوز(کراچی)صوبائی سیکریٹریٹ مجلس وحدت مسلمین سندھ و دعا کمیٹی کی جانب سے شعراء کرام، منقبت، نعت خواں، صحافی، سماجی شخصیات کے اعزاز میں وحدت ہاؤس سولجر بازار میں عید ملن پارٹی کے سلسلے میں عشائیہ کا اہتمام کیا گیا، جس میں مولانا نعیم الحسن، آغا سجاد شبیر رضوی، میجر (ر) قمر عباس رضوی، ایم ڈبلیو ایم رہنما تقی ظفر، محمد فیضان رضا قادری، ناصر آغا، ثاقب رضا ثاقب، ظہیر رضوی، نقی لاہوتی، حسین موسیٰ، محمد علی جلالوی، محمد ضامن، علی رضا جعفری، دانش عابدی، جہاں زیب زیدی، وصی حسن، خالد حسین صحافی، نوشاد علی، ناصر علی صحافی، اورعلی عباس نے شرکت کی، مولانا نعیم الحسن، علامہ سجاد شبیر رضوی، ناصر حسینی، محمد فیضان قادری، ناصر آغا، حسین موسی نے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کو مجلس وحدت مسلمین پاکستان کا چیئرمین منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کی اور امید کی کہ جس احسن طریقے سے علامہ راجہ ناصر عباس نے سیکریٹری جنرل کی حیثیت سے ملک، عوام، و ملت جعفریہ کی بہترین خدمات انجام دی اس سے بہتر انداز میں چیئرمین کی حیثیت سے اپنا فرائض ادا کریں گے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے مولانا نعیم الحسن، علامہ سجاد شبیر رضوی، ناصر حسینی نے کہا کہ پاک فوج کو ٹارگٹ کرنے کی حکمت عملی ملک کے لئے تباہ کن ہے، سیاستدان فوج کیخلاف بیان بازی کی پالیسی کو ترک کریں اور عوام و ملک کی صحیح معنوں میں خدمت کریں۔ ناصر حسینی نے ملک بھر میں ملت جعفریہ کے نوجوانوں کے گھروں پر بلاجواز چھاپوں اور گرفتاریوں کی بھرپور مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ملت جعفریہ کے نوجوانوں کو فی الفور رہا کیا جائے، کئی سالوں سے لاپتہ افراد پر اگر کوئی مقدمات ہیں تو عدالتوں میں پیش کیا جائے، نہیں تو انکو فوری طور پر آزاد کیا جائے۔ آخر میں مولانا نعیم الحسن نے ملک کے ترقی و استحکام و پاک افواج کی سلامتی کیلئے اور تمام مریضوں باالخصوص ایم ڈبلیو ایم کے سیکریٹری سیاسیات علی حسین نقوی، ارشداللہ مکتبی کی صحت و سلامتی کے لئے دعا کی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے رہنماء علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ ایم ڈبلیو ایم پاکستان ایک جمہوری سیاسی مذہبی جماعت ہے، جو ایک شفاف جمہوری آئینی طریقہ کار کے مطابق فیصلے کرتی ہے اور شفاف جمہوری انداز سے مرکزی سربراہ کا انتخاب کرتی ہے۔ جس ملک میں کونسلر اور یوسی چیئرمین تک کے لئے اخلاقی اصولوں کو پامال کیا جاتا ہو اور سیاسی جماعتوں میں خاندانی بادشاہت اور موروثی نظام کے سبب داخلی جمہوریت کا فقدان ہو، وہاں مجلس وحدت مسلمین کی 12 سالہ تاریخ ایک ایسی جمہوری جماعت کے طور پر دیکھی جاتی ہے جو اسلامی اصولوں سے مزین ہے۔ لابنگ اپنے امیدوار کے حق میں ورک اور دیگر اخلاقی کمزوریوں سے پاک اہلیت اور میرٹ کی بنیاد پر شفاف انتخابی عمل کے ذریعہ مسلسل چوتھی مرتبہ ایک ملک گیر جماعت کا بھاری اکثریت کے ساتھ سربراہ منتخب ہونا علامہ راجہ ناصر عباس جعفری سے کارکنوں اور قوم کی والہانہ محبت کا آئینہ دار ہے۔

انہوں نے کہا کہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری قوم ملک و ملت کا درد رکھنے والے ایک محب وطن شجاع، حق گو اور حق شناس رہنماء کے طور پر عوام کے محبوب رہنماء ہیں۔ جنہیں پاکستان کے عوام خصوصاً ملت جعفریہ نے ہمیشہ اتحاد بین المسلمین کے علمبردار ایک بہادر انقلابی رہنماء کے طور پر مشکل ترین حالات میں قوم کی درست سمت میں رہنمائی کرتے دیکھا ہے۔ جب وہ عالمی استکباری قوتوں کو بے خوف بن کر للکارتے ہیں تو ہمیں ان کی گفتگو میں قائد شہید کا لہجہ اور ان کے کردار سے شہید قائد کی خوشبو آتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کے بطور چیئرمین ایم ڈبلیو ایم پاکستان انتخاب پر مجلس وحدت مسلمین کے بہادر کارکنوں، ملت جعفریہ اور پاکستانی قوم کو مبارکباد پیش کرتا ہوں۔ ان شاء اللہ ان کی قیادت میں مجلس وحدت مسلمین کے بہادر کارکن قائد شہید کے افکار کے مطابق ملک و ملت کی خدمت کریں گے اور مظلوموں کی نصرت اور ظالم استکباری قوتوں سے برسر پیکار رہیں گے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام اسلام آباد میں جاری تین روزہ مرکزی راہیان کربلا کنونشن کے آخری روز وحدت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےشیعہ سنی علماء و قائدین بشمول سربراہ ملی یکجہتی کونسل پاکستان ڈاکٹر ابوالخیر محمد زبیر،نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان لیاقت بلوچ، سربراہ مرکزی جمعیت اہل حدیث علامہ ضیاءاللہ شاہ بخاری،مفتی گلزار نعیمی ودیگر نے علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کو ایم ڈبلیوایم کا چیئرمین منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کی اور ان کے انتخاب کو ملک اور امت مسلمہ کے لئے باعث خیر برکت قرار دیا اور نیک خواہشات کا اظہار کیا۔

سربراہ ملی یکجہتی کونسل صاحبزادہ ابوالخیر محمد زبیرنے کہا کہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کو چیئرمین منتخب ہونے پر مبارک باد پیش کرتا ہوں، طویل عرصہ سے ان کے ساتھ ملی یکجہتی کونسل کے فورم پر کام کا موقع ملا انہیں علم اور تعلم کے لئے ہمیشہ فکر مند پایا ہےان کا انتخاب ایم ڈبلیوایم کے اراکین کی سیاسی دانشمندی کا منہ بولتا ثبوت ہے ۔

جماعت اہلحدیث کے امیرضیا اللہ شاہ بخاری نے کہا کہ ہمیں اپنی ذمہ داریوں کا درک کرتے ہوئے فکری ہم آہنگی کے لیے جدوجہد کرنا ہو گی۔فکری انتشار کا خاتمہ حکم ربی ہے۔انہوں نے کہا کہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کے ساتھ مختلف نشستیں رہی ہیں ان کی محفل سے اٹھنے کا دل نہیں کرتا علوم کا سرچشمہ ہیں ، ان جیسی شخصیت کو ایم ڈبلیوایم کا تاحیات سربراہ ہونا چاہئے۔

نائب امیر جماعت اسلامی لیاقت بلوچ نے کہا کہ وحدت کانفرنس کے انعقاد اور علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کو چیئرمین منتخب ہونے پر مبارکباد پیش کرتا ہوں، پاکستان میں اتحاد امت کی جتنی ضرورت آج ہے پہلے کبھی نہیں تھی۔ہمیں مل کر استعماری قوتوں کا مقابلہ کرنا ہوگا۔

مفتی گلزار نعیمی نے کہا کہ دین اسلام ہمیں خدا کی رسی کو مل کر مضبوطی سے تھامے رکھنے کی تلقین کرتا ہے، پاکستان کو موجودہ بحرانوں سے نکالنے کیلئے دینی طبقات کا اکھٹا ہونا ناگزیر ہے ۔ اسلام کی خدمت اور اتحاد امت کیلئے علامہ راجہ ناصرعباس جعفری کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔

شیعہ علماء پاکستان کے صدر سید حسنین گردیزی نے کہا کہ مسلمانوں کے درمیان وحدت کی بنیاد دین ہے۔شیعہ علماء اتحاد و اخوت کو اپنا شرعی فریضہ سمجھتے ہوئے اس کے لیے کوشاں ہیں۔مسلمان جتنے ایک دوسرے کے قریب ہوں گے ان کامستقبل اتنا ہی زیادہ روشن ہو گا۔

گلگت بلتستان کے وزیر زراعت میثم کاظم نے کہا کہ مجھے مجلس وحدت مسلمین کا ادنی سا کارکن ہونے پر فخر ہے۔انہوں نے کہا کہ نظریہ اسلام پر معرض وجود میں آنے والی ریاست میں مذہبی جماعتوں کا سیاسی کردار محدود کر دیا گیا ہے۔ملت تشیع نے ہمیشہ وحدت اور مذہبی رواداری کی بات کی۔ وطن عزیز میں بیرونی مداخلت کو ملک وقوم کی عزت و حمیت کے منافی قرار دیا۔مجلس وحدت مسلمین اس خود مختار پاکستان کے لیے جدوجہد جاری رکھے گی جس کا خواب قائد و اقبال نے دیکھا تھا۔

پارا چنار کے تحصیل ناظم آغا مزمل نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ملت تشیع کا سیاسی استحکام وقت کا اہم تقاضا ہے۔سیاسی نظام سے لاتعلق رہنا کسی بھی اعتبار سے درست نہیں۔کامیابی کے بعد ہماری ذمہ داری میں مزید اضافہ ہوا ہے جس سے غافل نہیں رہا جاسکتاپاراچنار میں اتحاد و وحدت بین المسلمین کے لئےکوشاں رہیں گے۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) نومنتخب چیئرمین مجلس وحدت مسلمین پاکستان علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے ایم ڈبلیوایم کے زیر اہتمام اسلام آباد میں جاری تین روزہ مرکزی راہیان کربلا کنونشن کے آخری روز منعقدہ وحدت کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ امریکہ اور اُس کے حواری نہ صرف پاکستان بلکہ اُمت مسلمہ کے دشمن ہیں، وہ ہماری طاقت کو کمزور کرنا چاہتا ہے، ہماری مضبوطی اور کامیابی وحدت میں ہے، عزت کا راستہ اتحاد و وحدت کا راستہ ہے، پاکستان ہر دور میں امریکہ اور اُس کے حواریوں کی خواہش رہی ہے لیکن پاکستان کی محب وطن جماعتیں کل بھی امریکہ جیسے ناسور کے خلاف تھیں اور آج بھی اُسے درندہ سمجھتی ہیں، ہم چاہتے ہیں کہ ہمارے فیصلے واشنگٹن کی بجائے اسلام آباد میں ہوں، ہم ایک آزاد اور خود مختار ملک کے خواہ ہیں، ہم چاہتے ہیں ہماری خارجہ پالیسی آزاد ہو اور ہم خود اپنے مستقبل کا فیصلہ کریں ۔ امریکی اسٹیبلشمنٹ کو انسانیت کا دشمن سمجھتے ہیں، امریکہ کی ذات میں ظلم و بربریت ہے ، ہم امریکہ اور اس کے سسٹم سے نفرت کرتے ہیں۔

انہوں نےکہا کہ اسرائیل جسے امریکہ اور برطانیہ نے قائم کیا وہ انسانیت کا دشمن ہے ، فلسطینی مسلمانوں پر ہونے والی ظلم و بربریت میں اسرائیل کے ساتھ ساتھ امریکہ برابر کا شریک ہے۔ ہم پاک فوج کی دل و جان سے قدر کرتے ہیں، ہم دوبارہ کسی کو ملک توڑنے نہیں دیں گے، اس ملک کے مسائل کا حل فوری الیکشن ہیں، کسی سیاسی و مذہبی شخص قتل ہوا تو عوام کو کوئی نہیں روک سکے گا، ہم مزید کسی ایڈوانچر کے متحمل نہیں ہیں، ہمیں میدان میں حاضر رہنا ہے اور ملک دشمنوں کا راستہ روکنا ہے۔ ہم نے اپنی فوج کو بھی بچانا ہے، جو بھی پاک فوج کو کمزور کرنے کی کوشش کرے وہ ملک کا دشمن اور قوم کا خائن ہے، جن چوروں ، خائنوں اور لٹیروں کو جیلو ں میں ہونا چاہیے تھا اُنہیں حکومت دیدی ہے اور جو قوم کے محب وطن ہیں اُنہیں مسنگ کر دیا ہے۔

Page 3 of 1222

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree