The Latest

وحدت نیوز(ملتان)مجلس وحدت مسلمین جنوبی پنجاب کے سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا ہے کہ یوم انہدام جنت البقیع کے موقع پر ملک بھر کی طرح جنوبی پنجاب بھر میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالی جائیں گی، ملتان میں 8 شوال 10 مئی کو گھنٹہ گھر چوک سے نواں شہر چوک تک احتجاجی ماتمی ریلی نکالی جائے گی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایم ڈبلیو ایم جنوبی پنجاب کی صوبائی کابینہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ڈپٹی سیکرٹری جنرل سلیم عباس صدیقی، علامہ قاضی نادر حسین علوی، انجینئر سخاوت علی، وسیم عباس زیدی، ندیم کاظمی، علی رضا بخاری، فہیم جعفر سمیت دیگر شریک تھے۔ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ اقتدار حسین نقوی نے کہا کہ 8 شوال 1926ء کو آل سعود نے جنت البقیع میں مدفن جگر گوشہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سیدہ فاطمۃ الزہراء سلام اللہ علیہا، آئمہ کرام اور صحابہ کرام کی قبور کو مسمار کر دیا، جو کہ تاریخ اسلام کا ایک سیاہ باب ہے۔

یہی وجہ ہے سعودی عرب اپنی نابودی کی جانب بڑھ رہا ہے، جس نے مکہ و مدینہ کی حرمت کو پامال کر دیا، یہود و ہنود کے گٹھ جوڑ سے گرجا گھروں اور مندروں کی تعمیر کا سلسلہ جاری ہے، جگہ جگہ جوا خانے، شراب خانے اور کسینوز بنائے جا رہے ہیں، ماضی میں حج پر پابندی رہی، لیکن موسیقی کے کنسرٹ منعقد کیے گئے، سعودی حکومت مکہ و مدینہ کی آڑ میں مسلمانوں کے جذبات سے کھیل رہی ہے اور آہستہ آہستہ مسلمانوں کی غیرت کا سودا بھی کر رہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ 8 شوال کو مجلس وحدت مسلمین ملک بھر میں احتجاجی مظاہرے اور ریلیاں نکالے گی۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے سیکرٹری جنرل علامہ شیخ محمد صادق جعفری نے کہا ہے کہ 8 شوال 1344ھ تاریخ کا وہ سیاہ ترین دن ہے جس دن خاندان رسالت صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور اصحاب رسول اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مزارات کو مسمار کرکے آل سعود کے انتہاپسندوں نے اسلامی اقدار کو پامال کیا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ایک خصوصی نشست سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ علامہ صادق جعفری  نے کہا کہ تاریخ آل سعود کے سیاہ کارناموں سے پُر ہے اور ان میں انہدام جنت البقیع سیاہ ترین کارنامہ ہے کہ جس نے آل ِسعود کا مکروہ اور منافق چہرہ عالم ِاسلام کے سامنے بے نقاب کردیا، اسلام کے اس عظیم و مقدس قبرستان جنت البقیع میں دُختر رسول خاتون جنت سیدہ فاطمہ زہرا سلام اللہ علیھا، ازواج مطہرات (رض)، اہلبیت رسول علیھم السلام اور اصحاب ِرسول رضوان اللہ علیھم مدفون ہیں اور ان کے مقدس مزارات کی توہین و بے حرمتی کرتے ہوئے مسمار کرنا دراصل شعائر اللّہ کی توہین کرنے اور شعائر اللّہ کو مسمار کرنے کے مترادف ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ آل ِسعود نے جنت البقیع کے مقدس قبرستان میں دُختر رسول علیھا السلام و اہلبیتؑ رسول علیھم السلام اور اصحاب ِرسول رضوان اللہ علیھم کے مقدس مزارات کی توہین و بے حرمتی کرتے ہوئے تمام مقدس مزارات کو بلڈوزر کے زریعے مسمار کردیا جوکہ عالم اسلام میں غلامان ِرسول اللّہ صَلَّى اللّٰهُ عَلَيْهِ وآلہِ وَسَلَّم کے سینوں میں زہر آلود خنجر کی مانند ہے۔ علامہ صادق جعفری کا کہنا تھا کہ جو حکمران فلسطین و یمن کے مظلوم مسلمانوں کے مخالف اور اسرائیل و امریکہ جیسے اسلام دشمنوں کے حامی ہوں وہ مسلمان کہلانے کے کبھی مستحق نہیں ہوسکتے، آل سعود کی سوچ کو ہی لے کر داعش نے شام میں انبیا کرامؑ، اصحاب رسولؓ حضرت اویس قرنیؓ، و حضرت حجر بن عدیؓ اور خلیفہ حضرت عمر بن عبدالعزیزؒ کے مزارات تک مسمار کردیئے، ہدف نواسی رسول سیدہ زینب سلام اللہ علیھا کا مزار تھا لیکن مدافعین حرم کی سخت مزاحمت کی وجہ سے داعش کو وہاں منہ کی کھانی پڑی۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی سیکرٹری سیاسیات اسد عباس نقوی نے مرکزی سیکرٹریٹ میں کنونشن کور کمیٹی سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ  پاکستان عالمی استعماری طاقتوں کا ایک اہم نشانہ ہے اورآج وطن عزیز کو در پیش خطرات پہلے سے کئی گنا زیادہ ہیں ۔جہاں بیرونی مداخلت اور دبائو ہے وہیں بیرونی اور داخلی دہشتگردوں نے وطن عزیز کو مشق ستم بنا رکھا ہے۔پاکستانی عوام کے ساتھ ساتھ مسلح افواج کے جوان جو وطن عزیز کی جغرافیای سرحدوں کی حفاظت پر مامور ہیں کو مسلسل نشانہ بنایا جا رہا ہے اس کیفیت سے نکلنے کے لئے دینی طبقات کا کردار اور مشترکہ بیانیہ بہت اہم ہے ۔

انہوں نے کہا کہ اسلام کے ماننے والونے پوری دنیا میں اپنے اپنے وطن کے دفاع میں کلیدی کردار ادا کیا ہے وطن عزیز پاکستان کےعوام بھی دینی قیادت سے راہنمائی حاصل کرنا چاہتے ہیں دینی طبقات کی ذمہ داری بہت بڑھ جاتی ہے۔ ملت کے علما ء کے رہبرانہ کردار کے تعین اور منظم سازشوں اور خطرات کا نظم کے ساتھ مقابلہ کرنے کے لئے دینی قیادت کو صف اول پر کھڑے ہو کر قائدانہ کردار اد اکر کے پاکستان کو اس بھنور سے نکالنا ہو گااور پاکستان میں بیرونی مداخلت، فوج، عدلیہ اور دیگر اداروں کے خلاف ہونیوالی سازشوں کا مقابلہ کرنا ہو گا  انہی موضوعات کو مد نظر رکھتے ہوئے اس امر کی ضرورت محسوس ہو رہی ہےکہ ملک بھر سے مختلف مسالک سے تعلق رکھنے والے انقلابی قیادت ایک جگہ جمع ہو کر منظم لائحہِ عمل تیار کرےاور ملک و ملت کی مشترکہ آواز بنیں ۔

اسد نقوی نے مزید کہاکہ اس سلسلہ میں قومی بیانیہ کے لئے جلد ایک عظیم الشان"وحدت کانفرنس" کا انعقاد کیا جائے گا جس میں پاکستان کی مذہبی قیادت خطاب فرمائے گی ۔ان شاء اللہ ملی و ملکی اور بین الاقوامی صورت حال کے تناظر میں اپنے وظیفہ شرعی کی بنیاد پر حکمت عملی ترتیب دینے کے لئے یہ کانفرنس انتہائی مؤثر ثابت ہو گی ۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصودعلی ڈومکی نے کہا ہے کہ آل سعود نے آئمہ ھدی اھل بیت رسول صحابہ کرام اور اولیائے الہی کے مقدس مزارات منہدم کرکے دنیا کے کروڑوں انسانوں کو سوگوار کردیا ہے۔ سر زمین وحی پر شعائر اسلام اور احکام دین کو پامال کرتے ہوئے رقص و سرود کی محفلیں اور کنسرٹ سجانے والے آل سعود کا مکروہ کردار اب امت مسلمہ کے سامنے بے نقاب ہو چکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ آل سعود نے مدینہ طیبہ میں جنت البقیع جبکہ مکہ معظمہ میں جنت المعلی کو منہدم کرکے امت مسلمہ کو سوگوار کردیا۔ شعائر اللہ کی توہین آل سعود کا ناقابل معافی جرم ہے۔ سر زمین وحی پر دینی احکام کی دھجیاں اڑاتے ہوئے آل سعود نے سعودی عرب میں حجاب پر پابندی ختم کر دی آل سعود بے حیائی فحاشی اور عریانی کی ریاستی سرپرستی میں ترویج کر رہے ہیں۔ یمن کے مظلوم عوام کے خلاف جارحیت کا آغاز اور عوام پر بمباری اور یمنی مسلمانوں کا قتل عام داعشی دھشت گردوں کی سرپرستی قبلہ اول مسجد اقصی اور سر زمین فلسطین و کشمیر سے خیانت اور امریکہ و اسرائیل کی غلامی آل سعود کے اسلام دشمن کردار کی عکاس ہے۔ اب تو آل سعود دین اور شعائر دینی سے فرار کرتے ہوئے سعودی پرچم سے کلمہ طیبہ محو کر کے سعودی عرب سے دین کے آخری آثار بھی مٹانے کے درپے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ 8 شوال یوم انہدام جنت البقیع کے موقع پر پوری دنیا کے عاشقان اھل بیت آل سعود کی اس ظلم و بربریت کے خلاف یوم احتجاج منائیں گے اور جنت البقیع و جنت المعلی میں اھل بیت اطہار صحابہ کرام اور اولیائے الہی کے مقدس مزارات کی تعمیر نو کا مطالبہ کریں گے۔ ان شاء اللہ جنت البقیع عنقریب خدا کے صالح بندوں کے ہاتھوں جلد تعمیر ہوگا اور آل سعود کے شجرہ خبیثہ کا عبرتناک انجام دنیا جلد دیکھے گی۔

وحدت نیوز(کندھ کوٹ) مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع کشمور ایٹ کندھ کوٹ کی جانب سے آمدہ بلدیاتی انتخابات برائے میونسپل کمیٹی کے سلسلے میں ایک اھم اجلاس مجلس وحدت مسلمین پاکستان ضلع کشمور ایٹ کندھ کوٹ کے سیکریٹری جنرل میر فائق علی جکھرانی کی زیر صدارت منعقد ہوا ۔

اجلاس میں سٹی کندھ کوٹ کے تنظیمی عھدیداران علمائے کرام بانیان نے کثیر تعداد میں شرکت کی اور بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے اھم مشاورت ھوئی اور مشترکہ فیصلہ کیا گیا کہ مجلس وحدت مسلمین بلدیاتی انتخابات میں پوری قوت کے ساتھ حصہ لے گی اور کندھ کوٹ میونسپل کمیٹی کے مختلف وارڈز پر خیمہ کے نشان سے مضبوط امیدوار نامزد کئے جائیں گے۔

 اجلاس میں مولانا ادب حسین نجفی ، مولانا ممتاز علی منتظری ، مولانا فرمان علی عسکری ، استاد امداد علی گولو ، مولانا اعجاز علی جعفری ، راجہ پرویز کربلائی ، صابر حسین کربلائی ، رحمت اللہ چنہ ، عبدالغنی شیخ ، محمد علی شیخ ، صابر علی ملک ، علی حسن شیخ ، رئیس غلام عباس شیخ ، بابو ملک ، علی رضا شیخ ، محمد رفیق شیخ ، سید مقبول شاہ ، محمد سچل شیخ ، جاوید علی میرانی و دیگر نے شرکت کی ۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کےتین روزہ مرکزی راہیان کربلا کنونشن سال 2022ء کا انعقاد 13،14،15 مئی بروز جمعہ ،ہفتہ اور اتوار کو جامع مسجدوامام بارگاہ الصادق ؑ ٹرسٹ جی نائن ٹو اسلام آباد میں ہوگا۔ کنونشن کے آخری روز آئندہ تین سالوں کیلئے نئے مرکزی سیکریٹری جنرل کا انتخاب عمل میں لایا جائے گا۔ اجلاس میں ملک بھرسے اراکین شوریٰ مرکزی شریک ہوں گے۔

 مرکزی سیکرٹریٹ اسلام آباد میںکنونشن کےانتظامی حوالے سے اہم اجلاس منعقد ہوا ۔اجلاس کی صدارت چیئرمین مرکزی کنونشن راہیان کربلا برادر ملک اقرار حسین علوی نے جبکہ مرکزی کابینہ کی نمائندگی برادر اسد عباس نقوی مرکزی سیکرٹری سیاسیات ،برادر نثار علی فیضی مرکزی سیکرٹری تعلیم اور علامہ محمد اقبال بہشتی مرکزی سیکرٹری مالیات نے کی اس کے علاوہ ضلع راولپنڈی کی ضلعی کابینہ اور ضلع اسلام آباد کی ضلعی کابینہ کے نمائندوں نے شرکت کی ۔

اجلاس میں مرکزی آفس اورمرکزی شعبہ جات کے نمائندوں نےبھی خصوصی شرکت کی ۔ اجلاس میں کئی اہم فیصلے کیے گئے اور مرکزی کنونشن کے اجرائی امور کے لئے کمیٹیاں تشکیل دے دی گئیں ۔ اور کمیٹیوں کی ذمہ داریوں کا بھی اعلان کردیا گیا ہے ۔

وحدت نیوز(رپورٹ: سید عدیل زیدی) رواں سال 4 مارچ کو پشاور میں نماز جمعہ کے دوران شیعہ جامع مسجد کوچہ رسالدار میں ہونے والے خودکش حملہ میں 70 سے زائد نمازی شہید جبکہ ڈیڑھ سو سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔ اس سانحہ نے ملک کو ہلا کر رکھ دیا اور درجنوں گھرانوں کو ہمیشہ کیلئے ایک ایسا دکھ دیا ہے، جس کا شائد ازالہ ممکن نہ ہو پائے۔ دہشتگردی کے اس اندوہناک اور دلخراش واقعہ کے بعد شہداء کے خانوادوں اور زخمیوں کی یہ پہلی عیدالفطر تھی، عید ایک ایسا موقع ہوتا ہے کہ جب بچھڑے ہوئے اپنوں کا یاد آنا ایک فطری عمل ہے، ایسے میں یقیناً کوچہ رسالدار واقعہ میں شہید ہونے والوں کے پسماندگان کو بھی اپنوں کی یادوں نے بہت ستایا ہوگا اور اسی طرح سانحہ میں زخمی ہونے والے نمازی بھی شائد اپنے زخموں کا درد محسوس کر رہے ہوں گے۔ سانحہ کے متاثرین کے زخموں پر مرہم رکھنے کیلئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری پشاور پہنچے اور انہوں نے عید شہداء کے لواحقین اور زخمیوں کیساتھ منائی۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے اپنے اس دورہ کے دوران متاثرین کے گھر، گھر جا کر شہداء کے لواحقین کو تعزیت اور غم بھری عید کی مبارکباد دی۔ علامہ راجہ ناصر عباس نے شہداء کے اہل خانہ سے بھی ملاقات کی اور ملک و ملت کے لیے شہداء کی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ پہلے مرحلے میں انہوں نے گلبہار کے 4 شہداء کے گھروں میں جا کر لواحقین سے تعزیت کی۔ شہید انیس الحسن کے بھائیوں کیساتھ ملاقات کے دوران انہوں نے کہا کہ شہداء نے کتنی عظیم سعادت حاصل کی ہے، انہوں نے شہید کے بچوں کو تاکید کرتے ہوئے کہا کہ اپنے شہید باپ کو دعاوں میں نہ بھولیں، کیونکہ شہید آپ کی مدد کرسکتا ہے۔ بعدازاں وہ شہید مظہر علی آخونزادہ کے گھر تشریف لے گئے، جہاں پر آخونزادہ خاندان کے بشتر عمائدین موجود تھے۔ اس موقع پر شیعہ علماء کونسل پاکستان کے مرکزی رہنماء مظفر علی آخونزادہ اور اقتدار علی آخوانزہد نے شہید مظہر آخونزادہ کی زندگی پر روشنی ڈالی کہ شہید ذاکر امام حسینؑ تھے، وہ ملی معاملات میں ہردم پیش پیش رہتے تھے۔

اخونزادہ خاندان کے عمائدین نے پشاور کے مسائل پر بھی گفتگو کی۔ اس موقع پر علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ میں نے پشاور کے عمائدین سے بہت کہا کہ آپ احتجاج کریں، بغیر احتجاج کے جنازے نہ دفنائیں، مگر کسی نے نہیں سنی۔ جب یہ سانحہ ہوا تو میں تہران میں شہید ڈاکٹر محمد علی نقوی کی برسی کے پروگرام میں شریک تھا، وہاں سے دوستوں کو بھیجا کہ اہلیاں پشاور کو احتجاج پر راضی کریں، مگر معلوم نہیں کہ کونسے ایسے عوامل کار فرما تھے کہ احتجاج نہیں ہوسکا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اب بھی حکومتی بے حسی کی انتہاء ہے، ہمارے شہداء کے لواحقین کو تو یہ بتایا جائے کہ اس دھماکے کے حوالے سے اب تک کیا پیش رفت ہوئی ہے۔؟ مگر جب تک آپ اپنے جنازوں کو خود نہیں روئیں گے، باہر سے کسی کو کیا پڑی ہے کہ وہ آپ کے شہیدوں کو روئے۔ انہوں نے شیعہ علماء کونسل اور امامیہ جرگے کے فعال رکن مظفر علی آخونزادہ سے کہا کہ اب بھی وقت ہے کہ مشترکہ کمیٹی بنائیں، ہم حکومت سے بات کریں کہ حکومت ہمارے مطالبات پر سنجیدگی سے غور کرے۔

اس کے بعد ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ نے معروف ذاکر اہلبیتؑ اور شیعہ علماء کونسل کے ضلعی صدر شہید مجاہد علی آخونزادہ کے گھر جا کر ان کے لواحقین سے تعزیت کی، انہوں نے شہید مجاہد علی آخونزادہ کی لکھی ہوئی تالیف کا مطالعہ بھی کیا۔ واضح رہے کہ شہید مجاہد علی آخونزادہ کا شمار پشاور کے فعال رہنماوں میں ہوتا تھا، انہوں نے قومی امن کمیٹی کی بھی بنیاد رکھی تھی اور پی ایچ ڈی کے اسٹوڈنٹس تھے۔ اس موقع پر شہید مجاہد کے بھائی اور شیعہ علماء کونسل کے مرکزی سیکرٹری اطلاعات زاہد علی آخونزادہ نے دھماکے کے بعد کے حالات اور مسائل کے حوالے سے علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کو آگاہ کیا۔ بعدازاں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے ولی آباد سے تعلق رکھنے والے 4 شہداء کے گھر میں جا کر تعزیت کی، اس موقع پر انہوں نے مختلف زخمیوں سے بھی ملاقاتیں کیں۔ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری ڈھکی کے تین شہداء کے گھر بھی گئے، جہاں ان کے خانوادگان سے تعزیت کی اور شہداء کی عظمت پر تفصیل سے گفتکو کی۔ ان کا کہنا تھا کہ شہداء ہماری قوم کا فخر اور سر کا تاج ہیں، ان کا لہو رائیگاں نہیں جائے گا۔ ملت تشیع نے قومی سلامتی اور امن کے لیے ان گنت قربانیاں دی ہیں۔

اپنے دورہ پشاور کے دوران علامہ ناصر عباس جعفری کوچہ رسالدار کے 7 شہداء کے گھر بھی گئے اور لواحقین سے تعزیت کی۔ وہ تحریک نفاذ فقہ جعفریہ کے شہید رہنماء مظہر علی کیانی کے گھر بھی گئے، جہاں پر ان کے والد محترم، بھائیوں اور دیگر رشتہ داروں کو تعزیت پیش کی۔ علامہ ناصر عباس نے شہداء کے قصے سنا کر شہید کے والد کو تسلی دی۔ انہوں نے کہا کہ شہید کے حوالے سے اللہ نے قرآن میں کہا ہے کہ ان کو مردہ نہ کہو، شہید زندہ ہے۔ ہمیں شہید کو بھولنا نہیں چاہیئے، ہمارے 12 میں سے 11 امام شہید ہیں، ہر نبیؑ اور آئمہؑ نے اللہ سے اپنی شہادت کی دعا مانگی، تو اس کا مطب ہے کہ یہ دنیا کی بہترین موت ہے، ہمیں بھی اللہ سے شہادت کی دعا کرنی چاہیئے۔ بعدازاں علامہ راجہ ناصر عباس جعفری سانحہ کوچہ رسالدار کے شہید باپ، بیٹے کے گھر بھی گئے، جہاں ان کے پسماندگان کیساتھ ملاقات کی اور تعزیت پیش کی۔ ان کا کہنا تھا کہ ہم مکتب اہلبیتؑ کے پیروکار ہیں اور باطل کیخلاف ڈٹ جانے کا عزم و حوصلہ کربلا سے لے رکھا ہے، ہمیں بزدلانہ کارروائیوں سے ڈرایا نہیں جا سکتا۔

علامہ راجہ ناصر عباس جعفری شہید ناصر کے گھر بھی گئے، جہاں پر ان کے بیٹے سے تعزیت اور فاتحہ خوانی کی، واضح رہے کہ شہید ناصر متاثرہ مسجد کی خدمت میں پیش پیش رہتے تھے اور مسجد کمیٹی کے رکن بھی تھے۔ اس کے علاوہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری سانحہ میں شہید ہونے والے افغان باشندوں کے گھر میں بھی گئے اور متاثرین سے تعزیت کی۔ اس دوران علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے مسجد کوچہ رسالدار کا بھی دورہ کیا، جہاں پر نماز مغرب ادا کی اور نمازیوں کو درس بھی دیا۔ انہوں نے شہید کے بلند رتبے پر گفتکو کرتے ہوئے لوگوں سے التجا کی کہ خدارا آب کسی طرح غفلت نہ برتیں۔ صرف 45 منٹ جمعہ کی نماز ہوتی ہے، اس کی سکیورٹی کونسی مشکل تھی، جو ہم نے 70 شہداء دے دیئے۔ انہوں نے کہا کہ یہ واقعہ پاکستان کے سب زیادہ دلخراش واقعات میں شامل ہے۔ اس موقع پر علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے شہید پیش نماز علامہ ارشاد حسین خلیلی کے بھائی، کم سن بیٹوں اور دیگر شہداء کے لواحقین جو اس وقت مسجد تشریف لائے، کو تعزیت پیش کی۔ نماز مغرب کے بعد علامہ راجہ ناصر عباس نے محلہ مروی ہا سے تعلق رکھنے والے تین شہیدوں کے گھروں میں جا کر لواحقین سے تعزیت کی۔

اس موقع پر علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کئی شہداء کے بچوں سے ملاقاتوں کے دوران شہید کی لاج رکھنے کی تلقین کرتے ہوئے کہا کہ آپ شہید کے بچے ہیں، اپنے والد کی کمی اس گھر میں محسوس نہیں ہونے دیجئے گا۔ کبھی کبھی اپنی ماں کے قدموں کو چوم لینا، ان کو کبھی اذیت نہیں دینا، کیونکہ شہید سب دیکھ رہا ہوتا ہے، ایسے عمل سے وہ ناراض ہوتا ہے۔ اپنی ماں کا خاص خیال رکھنا، ان کی دعائیں لینا۔ علامہ ناصر عباس نے مزید کہا کہ میں بھی اس دنیا میں شہادت کا امیدوار ہوں، خداوند متعال سے میری شہادت کی دعا کیجیئے گا۔ میری قوم کا ایک ایک فرد مجھے اپنی اولاد، اپنے خونی رشتوں کی طرح عزیز ہے۔ ان شاء اللہ خانوادگان شہداء کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے۔ تمام شہداء کے خانوادوں سے تعزیت کے بعد علامہ راجہ ناصر عباس رات گئے اسلام آباد کیلئے روانہ ہوگئے۔ یوں انہوں نے پورا دن شہداء کے لواحقین اور زخمیوں کیساتھ گزارا۔ یاد رہے کہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کا سانحہ مسجد کے بعد پشاور کا یہ دوسرا دورہ ہے، اس سے قبل بھی انہوں نے اپنے دورہ کے دوران متاثرین سے ملاقاتیں کی تھیں اور دوبارہ پشاور آنے کا وعدہ کیا تھا۔

مجلس وحدت مسلمین کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے عید سانحہ کوچہ رسالدار کے متاثرین کے نام کرکے یقینی طور پر ان کے تازہ زخموں پر کسی نہ کسی صورت مرہم ضرور رکھا ہے، دورہ کے دوران ان کی زبان سے ادا ہونے والے یہ جملے کہ ’’میری قوم کا ایک، ایک فرد مجھے اپنی اولاد، اپنے خونی رشتوں کی طرح عزیز ہے۔ ان شاء اللہ خانوادگان شہداء کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے۔‘‘ درحقیقت عملی طور پر ان کے جذبات کی ترجمانی کر رہے تھے، قوم کے ہر فرد کو اپنی اولاد اور خونی رشتوں کی طرح عزیز سمجھنے والے ہی رہبر و رہنماء کہلانے کے لائق ہوتے ہیں اور یہ علامہ راجہ ناصر عباس نے ملت تشیع پر پڑنے والے ہر مشکل وقت میں ثابت کیا ہے۔ ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ کا یہ اقدام انتہائی قابل تحسین اور دوسرے اکابرین کیلئے قابل تقلید مثال ہے کہ وہ بھی کوچہ رسالدار کے شہداء کے لواحقین اور زخمیوں کیساتھ ملاقات کیلئے وقت نکالیں۔ ایسے میں وقت کے وزیراعظم سے تعزیت کیلئے پشاور آنے کا مطالبہ شائد اتنی اہمیت نہ رکھتا ہو۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ امریکی مداخلت کے خلاف پاکستانی قوم کے بیانیے کو کروڑوں شہریوں اور ہر طبقہ فکر کی تائید حاصل ہے، قوم نے دو ٹوک موقف دے دیا ہے کہ پاکستان کے معاملات میں بیرونی مداخلت ناقابل قبول ہے اور پاکستانی قوم امریکی سازش کو ماننے کے لئے تیار نہیں ہے۔ ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ رہبر کبیر بانی انقلاب اسلامی حضرت امام خمینی (رھ) نے امریکہ کو شیطان بزرگ کہہ کر اس کے مکروہ چہرے کو بے نقاب کیا اور امریکہ کے انسان دشمن استکباری نظام اور ظالمانہ کردار کو دنیا کے سامنے بے نقاب کیا۔ وطن عزیز پاکستان میں قائد شہید علامہ سید عارف حسین الحسینی کے بیٹوں نے ہمیشہ امریکی استعمار کے شیطانی منصوبوں کو بے نقاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ آج بھی آگے بڑھ کر شیطان بزرگ کے انسان دشمن عزائم کو بے نقاب کرتے ہوئے قوم کی صحیح رہنمائی کرنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ انجمن غلامان امریکہ ملک میں رسوا ہو چکی ہے اور پوری قوم یک آواز کہہ رہی ہے کہ جو امریکہ کا یار ہے غدار ہے۔ اب ملک و ملت کے غدار قوم میں نفرت کی علامت بن چکے ہیں۔ جس دن وطن عزیز پاکستان کو شیطان بزرگ امریکہ کی شیطنت سے آزادی ملی وہ دن قوم کے لئے عید کا دن ہوگا۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری حفظہ اللہ نے عید الفطر  پشاور  سانحہ کوچہ رسالدار میں زخمیوں اور خانوادگان شہداء کے ہمراہ گزاری۔قائد وحدت متاثرین کے گھروں میں گئے اور انہیں عید کی مبارکباد دی۔

انہوں نے شہداء کے اہل خانہ سے بھی ملاقات کی اور ملک و ملت کے لیے شہداءکی قربانیوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔انہوں نے کہا کہ شہداء ہماری قوم کا فخر اور سر کا تاج ہیں۔ان کا لہو رائیگاں نہیں جائے گا۔ ملت تشیع نے قومی سلامتی اور امن کے لیے ان گنت قربانیاں دی ہیں۔ہم مکتب اہل بیت ع کے پیروکار ہیں اور باطل کے خلاف ڈٹ جانے کا عزم وحوصلہ کربلا سے لے رکھا ہے۔ہمیں بزدلانہ کارروائیوں سے ڈرایا نہیں جا سکتا۔

انہوں نے کہا کہ میری قوم کا ایک ایک فرد مجھے اپنی اولاد اپنے خونی رشتوں کی طرح عزیز ہے۔انشاءاللہ خانوادگان شہداء کو کبھی تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی معاون سیکریٹری تربیت علامہ شیخ محمدجان حیدری نے مسجد خدیجہ الکبری علی پور اسلام آباد میں نماز کے کے روح پرور اجتماع میں حالات حاضرہ پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں غیر فطری مفادات پر مشتمل متحدہ حکومت امریکی غلامی پر تلی ہوئی ہے یمن کے حوالے سے جو معاھدہ سامنے آرہاہے وہ قابل مذمت ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ مومنین کا مساجد محور متحدہ فورم وقت کی اشد ضرورت ہے تاکہ اتحاد و یگانگت کیساتھ قومی مسائل حل کرسکیں خطہ کے حالات افغانستان میں تشیع کا قتل عام اور ملک میں متعصب رویہ کو کھلی چھوڑ ملنا تشیع کے لئے نہایت تشویشاک امر ہے لہذا مومنین منظم اور متحد رہے اور ہر قسم کے دشمن سے مقابلہ کےلئے تیار رہے تاکہ ملک عزیز پاکستان کے استحکام کیساتھ ملک کے حقیقی فرزند بانیان پاکستان کی اولاد کا تحفظ یقینی ہو۔

Page 6 of 1222

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree