The Latest

وحدت نیوز(اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری ، ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ امین شہیدی ، علامہ حسن ظفر نقوی ، علامہ شفقت حسین شیرازی، ناصر عباس شیرازی و دیگر نےبرادر تہور عباس حیدری کےامامیہ اسٹوڈنٹس آگنائزیشن پاکستان کےنئےمیر کاروان منتخب ہونے پر مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے مشترکہ تہنیتی پیغام میں کہا ہے کہ مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے برادر تہور عباس حیدری کو طلبہ امامیہ کا روح رواں منتخب ہونےپر دل کی اتہا گہرائیوں سے مبارک باد پیش کرتے ہیں ، خدا وند متعال کی بارگاہ میں ان کی نیک توفیقات میں اضافے کی دعا کرتے ہیں اور ساتھ ہی   امید ہے کہ نومنتخب میر کاروان طلاب امامیہ کی رہنمائی، ملک قوم کی سربلندی اور طلباء کے حقوق کے لئے اپنی تمام ترصلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے پرامن اور مستحکم پاکستان کے لئے کردار ادا کریں گے۔

وحدت نیوز(لاہور) ملت اسلامیہ میں بیداری کا سبب شہداء کے پاکیزہ لہو کا صدقہ ہے جو قومیں اپنے شہیدوں کو بھلا دیتی ہیں تاریخ میں اُن کا نام و نشان باقی نہیں رہتا، ہم شہداء کے وارثین ہیں، تاریخ گواہ ہے کہ اس غیور ملت نے ظالم کے سامنے سر جھکانے کےبجائے سر کٹانے کو ترجیح دی۔ ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ ناصرعباس جعفری نے امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے سالانہ مرکزی کنونشن میں شب شہداء کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے وطن عزیز میں ظالمانہ نظام کے خاتمے کا عہد کیا ہوا ہے اور انشاءاللہ اپنے لہو کے آخری قطرے تک ظلم، ناانصافی اور غریب کش بادشاہانہ نظام کے خلاف جدوجہد جاری رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ قیام پاکستان کے بعد پہلی دفعہ اس ملک کے حقیقی وارثان کرپٹ نظام کے خاتمے کے لئے سبز ہلالی پرچم تلے ایک ہیں، آئی ایس او ایک شجرہ طیبہ کا نام ہے جس کی آبیاری شہداء کے مقدس لہو سے ہوئی ہے، شہداء کا پاک لہو ہمارے پاس ایک مقدس امانت ہے،امامیہ طلباء اپنی توانائیاں وطن عزیز کے دشمنوں کے تعقب اور حصول علم پر صرف کریں ۔ پاکستان کے استحکام کے لئے سابقین آئی ایس او اپنا عملی کردار ادا کریں ، مجلس وحدت مسلمین آئی ایس او کے فارغ التحصیل طلبہ کے لئے قومی خدمت کا بہترین پلیٹ فارم ہے۔

 

علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ قائداعظم اور علامہ اقبال کے فرزندان آج ملک میں عوام کی حکمرانی کیلئے اور استحصالی نظام کیخلاف پختہ عزم کیساتھ میدان میں موجود ہیں اور انشاءاللہ وہ وقت دور نہیں جب پاکستان سیاسی فرعونوں، معاشی قارونوں اور مذہبی بلعم بعوروں کے چنگل سے آزاد ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ وطن عزیز امن کا گہوارہ بنے گااور مساوی حقوق سب کو میسر ہونگے۔ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ماڈل ٹاوُن کے شہداء ہمارے شہداء ہیں، ہم ان کے پاکیزہ لہو کو رائیگاں نہیں جانے دیں گے، ہم مظلوموں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔

وحدت نیوز(لاہور) امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائزیشن پاکستان کے سالانہ مرکزی سفیران ولایت کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ محمد امین شہیدی نے کہا کہ عالم انسانیت، عالمی حکومت کی طرف گامزن ہے، یعنی دنیا کو مہدویت یا عالمی حکومت کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ شہادت ہماری میراث ہے اور اس کے نتیجے میں ہم مزید مضبوط ہو رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ کسی بھی قوم کو برباد کرنے کے لئے مایوسی کا ہتھیار استعمال کیا جاتا ہے، لیکن ہم بیدار اور مضبوط قوم ہیں، عالمی سطح پر تشیع بیدار ہوئی ہے، جس کے ثمرات آج پورا عالم بشریت محسوس کر رہا ہے، پاکستان میں بھی محب وطن قوتوں کا مجتمع ہونا استحکام و بقاء وطن کے لئے ناگزیر ہے، موجودہ سیاسی تناظر کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے علامہ امین شہیدی نے کہا کہ نواز شریف کے کالے کرتوت سے پردے اٹھ چکے ہیں، نواز شریف جب تک رہے گا، اسلام اور مسلمانوں کو نقصان پہنچائے گا۔ انہوں نے کہا کہ اسلام آباد دھرنا کے نتیجے میں بیداری آچکی ہے، پاکستان میں اس وقت ایک منظم سازش کے تحت محرم سے قبل حالت کو خراب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے، لیکن دشمن یہ جان لے کہ ہم سوئے نہیں ہیں، بیدار ہیں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ ناصرعباس جعفری نے کہا ہے کہ راولپنڈی میں مولانا اشرف علی کے بیٹے امان اللہ کے قتل کی مذمت کرتے ہیں، مجلس وحدت ہر طرح کی دہشتگردی کی مخالف ہے، انہوں نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ اس قتل میں حکومت پنجاب ملوث ہے جس کا مقصد ہماری توجہ دھرنے سے ہٹانا اور ملک کے حالات کو فرقہ واریت کی طرف دھکیلنا ہے۔ یہی وجہ بنی کہ تکفیریوں کو کھلا چھوڑا گیا، جنہوں نے ناصرف عبادت گاہوں کو جلایا بلکہ ایک شخص کو زندہ جلا دیا۔ پارلیمنٹ کے سامنے دھرنے کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ حکومت مظلوموں کے حوصلوں کا امتحان لے رہی ہے لیکن دھرنے کے شرکاء نے حوصلوں کی جنگ بھی جیت لی ہے اور عنقریب یہ حکمران اپنے انجام کو پہنچیں گے۔

 

انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں ہونے والی فرقہ وارنہ کارروائیوں کے پیچھے حکومت ملوث ہے، جو ان تکفیروں کو سپورٹ کرکے ملک کو فرقہ واریت کی آگ میں دھکیلنا چاہتی ہے۔ عوام کے اندر کوئی نفرت یا فرقہ واریت نہیں ہے، چند تکفیری ملک کا امن خراب کر رہے ہیں اور حکمران ان کے اتحادی بنے ہوئے ہیں، یہی وجہ ہے کہ ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاتی۔ ان کا کہنا تھا کہ ظالم حکمران سمجھتے تھے کہ مظلوم تھک جائیں گے اور ہار جائیں گے، انشاءاللہ ظالم تھکیں گے اور مظلوم یہ جنگ جیتیں گے۔ علامہ ناصر عباس جعفری نے کہا کہ ہم فرقہ واریت کے ناسور کو جڑ سے اکھاڑ پھینکیں گے اور نفرتوں کی جہنم کو ختم کرکے رہیں گے، ہم حکمرانوں کی تمام سازشوں کو ناکام بنائیں گے۔

وحدت نیوز(کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ ناصرعباس جعفری کی اپیل پر راولپنڈی میں تکفیری دہشتگردوں کی جانب سے ٹائراں والی امام بارگاہ اور قرآن مجید کو نذرآتش کرنے، امام بارگاہ کے اہلسنت متولی میر افضل کو زندہ جلانے اور ایم ڈبلیو ایم کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری جنرل علامہ محمد امین شہیدی کے خلاف مفتی امان اللہ قتل کیس کی جھوٹی ایف آئی آر درج کرنے کیخلاف انچولی سوسائٹی کراچی میں احتجاجی ماتمی ریلی کا انعقاد کیا گیا۔ ایم ڈبلیو ایم کراچی کے زیرانتظام احتجاجی ماتمی ریلی بعد نماز مغربین مسجد و امام بارگاہ شہدائے کربلا سے نکالی گئی جو کہ شاہرائے پاکستان سے ہوتی ہوئی واپس امام بارگاہ پہنچ کر اختتام پذیر ہوئی۔ اس موقع پر ایم ڈبلیو ایم کے عہدیداران اور کارکنان سمیت لوگوں کی بہت بڑی تعداد موجود تھی۔ احتجاجی ماتمی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ایم ڈبلیو ایم کراچی کے رابطہ سیکرٹری علامہ سید علی انور جعفری نے کہا کہ راولپنڈی میں امام بارگاہوں کو نذرآتش کرنے اور امام بارگاہ کے متولی میر افضل کی شہادت تکفیری دہشتگرد عناصر کے سرپرست شریف برادران اور پنجاب حکومت کی انتقامی سیاست و کارروائیوں کا حصہ ہے اور محرم الحرام سے پہلے ملک میں فرقہ وارانہ نفرتوں کی آگ بھڑکانے کی گھناونی کوشش ہے، جسے محب وطن شیعہ سنی عوام کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دینگے۔

 

علامہ سید علی انور جعفری نے کہا کہ وطن عزیر پاکستان میں کوئی شیعہ سنی فساد نہیں ہے، یہ فقط ایک کالعدم تکفیری ٹولہ ہے کہ جسے امریکہ و سعودی عرب کی سرپرستی حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ملکی بقاء و سلامتی کیلئے ضروری ہے کہ دہشتگرد تکفیری گروہوں، مدارس، اداروں اور تنظیموں کے خلاف ملک بھر میں آرٹیکل 245 لگا کر بے رحمانہ فوجی آپریشن کیا جائے، تاکہ وطن عزیز کو امریکہ و سعودیہ کے ناپاک عزائم کی بھینٹ چڑھانے والوں سے پاک کیا جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ علامہ امین شہیدی کے خلاف درج ہونے والی مفتی امان اللہ قتل کیس کی جھوٹی ایف آئی آر دہشتگرد تکفیری عناصر اور انکی سرپرست پنجاب حکومت پر طاری اسی بوکھلاہٹ کا کھلا ثبوت ہے جو کہ امریکی سعودی نواز لیگی حکومت کیخلاف سنی شیعہ اتحاد کی مشترکہ جدوجہد کے نتیجہ طاری ہوچکی ہے۔ علامہ علی انور جعفری کا مزید کہنا تھا کہ پاکستان کے شیعہ و سنی عوام متحد ہیں اور تکفیریوں کی تمام سازشوں کے خلاف متحد ہوکر میدان میں حاضر ہیں اور اپنے اسی اتحاد سے تکفیری دہشتگردوں اور انکی سرپرست پنجاب حکومت کی تمام سازشوں کو ناکام بنائیں گے۔

 

احتجاجی ماتمی ریلی سے خطاب میں علامہ علی انور جعفری نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ایم ڈبلیو ایم کے سربراہ علامہ ناصر عباس جعفری کی سکیورٹی واپس لینا انتہائی قابل مذمت ہے اور اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ نواز حکومت انقلاب مارچ کی بڑھتی ہوئی کامیابیوں سے بوکھلاہٹ کا شکار ہو کر اپنے مخالفین کو ڈرانا چاہتی ہے لیکن شاید وہ نہیں جانتی کہ قائد وحدت علامہ ناصر عباس جعفری کے ہزاروں جانثار کارکنانِ وحدت ان کی حفاظت کرنا بخوبی جانتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر پنجاب حکومت کی سرپرستی میں تکفیری دہشتگردوں نے پاکستان میں سنی شیعہ اتحاد کی علامت علامہ ناصر عباس جعفری کو کوئی نقصان پہنچانے کی ناپاک کوشش کی اور قائد وحدت کو آنچ بھی آئی تو جانثاران وحدت اس آنچ سے جاتی عمرہ سمیت ملک بھر میں موجود شریف برادران کے فرعونی محلات اور اقتدار کو جلا کر راکھ کر دیں گے۔ علامہ سید علی انور جعفری نے مطالبہ کیا کہ راولپنڈی میں مسجد و امام بارگاہ ، قرآن پاک، علم حضرت عباس علمدار، تبرکات اور متولی میر افضل کو جلائے جانے کا مقدمہ شہباز شریف، رانا مشہود اور ڈی سی او ظفر ساجد کیخلاف توہین رسالت و توہین قرآن کے تحت درج کیا جائے، علامہ امین شہیدی کے خلاف درج جھوٹی ایف آئی آر واپس لے کر تمام گرفتار کارکنان کو رہا کیا جائے۔

وحدت نیوز (قم المقدسہ) مجلس وحدت مسلمین کے شعبہ قم المقدسہ کے زیراہتمام حوزہ امام خمینی میں پاکستان کی موجودہ سیاسی صورتحال اور ہماری ذمہ داریوں کے عنوان پر ایک سیمینار منعقد ہوا، جس میں مجلس وحدت مسلمین پاکستا ن کے مرکزی ڈپٹی سیکریٹری جنرل و سیکرٹری امور خارجہ علامہ سید شفقت شیرازی اورعلامہ شیخ اعجاز بہشتی نےخطاب کیا جب کہ اس موقع پر ایم ڈبلیوایم قم کے سیکریٹری جنرل علامہ ڈاکٹرغلام محمد فخرالدین بھی موجود تھے۔

 

 سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے علامہ سید شفقت شیرازی نے کہا کہ  مجلس وحدت مسلمین پر پوری قوم کو اعتماد اور یقین ہے اوروہ  اس کا مظاہر ہ کئی مواقع پر کرچکی ہے،ہمیں اتحاد بین المسلمین کا درس قائد شہید نے دیا ہے اور شہید کی درینہ خواہش تھی اور اس کا عملی جامہ آج پارلیمنٹ کے سامنے سر زمین مقد س پاکستا ن میں نظر آرہا ہے ۔یہ دھرنا در حقیت کامیابی کا زینہ ہے، ہم نے جو نتیجہ اخذکرنا تھا کرلیا ہے،اور ہم اپنے مقاصد میں پوری طرح کامیاب ہورہے ہیں ۔اگر کسی کو شک ہے تو میدان میں آکر دیکھیں۔ ہمیں کیسی کی طرف انتساب دینے کی کوئی ضرورت نہیں ہم خود اپنا تشخص بہتر جانتے ہیں ۔ہمیں پاکستانی ہونے پر فخر ہے اور اس فخر کی بنا پر وطن عزیز کے لئے بڑی سے بڑی قربانی دینے سے گزیز نہیں کرینگے۔

 

علامہ اعجاز بہشتی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہم فرعونیت اور نمرودیت کو مٹانے کے لئے نکلے ہیں جو آج بھی نواز کی شکل میں موجود ہے اس طاغوت کو بھگا کر ہی دم لیں گے ، پاکستان کے عوام کو تاریخ کے بد ترین حکمرانوں کا سامنا ہے، افسوس کہ جو ایوان عوام کے حقوق کی پاسبانی کا مجاز تھا آج وہ چوروں ، لٹیروں ، قاتلوں اور بدمعاشوں کی محفوظ پناہ گاہ بنا ہوا ہے۔ اصل شیعہ سنی وحدت سے ایم ڈبلیوایم نے پاکستان میں تکفیریت کو حقیقت میں دیوار سے لگایا ہےجس کا ثبوت مسلسل مجلس کے اکابرین کی ذات اور کردار پر حکومتی اداروں اور کالعدم جماعتو ں کے حملے ہیں ۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے زیر اہتمام راولپنڈی میں امام با رگاہ کو نذر آتش کرنے علامہ امین شہیدی کے خلاف جھوٹی ایف آئی آر اور قا ئد وحدت علامہ راجہ نا صر عبا س جعفری کی سیکورٹی واپس لینے کے خلاف احتجا جی مظا ہرہ کیا گیا جس سے خطا ب کرتے ہوئے علامہ سید ہا شم موسوی نے کہا کہ پنجا ب حکومت اور شریف برا دران پنجا ب میں انتقا می سیا ست پر اُتر آئی ہیں کئی ہفتوں سے جا ری کارکنان کی گرفتا ری کے بعد اب پنجاب حکومت کالعدم تنظیموں کی سر پرستی کرکے راولپنڈی اسلام آبا د میں فر قہ وارانہ فسا دات پھیلانے کی کوششوں میں مصروف ہے مفتی امان اللہ کے قتل کی ایف آئی آر میں ہمارے مر کزی قا ئد کو نامزد کرنا جس کے بعد شر پسند وں کے ہاتھوں امام بار گا ہ کو نذر آتش کرنے کے پیچھے محرم الحرام سے پہلے ملک میں فرقہ وارانہ نفرتوں کی آگ بھٹکانے کی کوشش ہے جسکو کسی صو رت کامیا ب نہیں ہونے دینگے ۔ ہمارے قا ئدین نے ہمیشہ اتحاد بین المسلمین کی با ت کی ہیں لیکن حکمران اپنی کرسی اقتدار کو بچا نے کیلئے بہت خطر ناک کھیل کھیل رہی ہے جس کی وجہ سے پور ے میں امن وامان کی صورت حال خر اب ہوسکتی ہے۔

 

مجلس وحدت مسلمین کوئٹہ ڈویژن کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل علامہ ولایت حسین جعفری نے خطا ب کرتے ہوئے کہا کہ قائد وحدت علامہ راجہ نا صر عبا س جعفری کی سیکورٹی وا پس لی گئی ہے انہوں نے کہا کہ پورے ملک کے ہزاروں کارکنان اپنے لیڈر کے سا تھ کھڑی ہیں اور اگر اُن کا ایک بال بھی ٹو ٹا تو اس کی ذمہ دار نواز حکومت ہوگی انہوں نے مزید کہا کہ حکومت انتقا می کاروا ئیوں پر اُتر آئی ہے جس سے معلوم ہوتا ہے کہ حکومت انقلاب مارچ کی بڑھتی ہوئی کامیا بیوں سے بوکھلا گئی ہے اور اس طر ح کے ہتکھنڈے استعمال کرکے مخا لفین کو ڈرانا چا ہتی ہے انہوں نے کہا کہ حکومت نے بیڈ گورننس کی مثا لیں قا ئم کردی ہے اور اپنی ہر غلطی کو چھپا نے کیلئے اُس سے بڑی غلطی کے مر تکب ہو رہی ہے جو اُن کے اقتدا ر کو لے ڈوبے گی۔انہوں مطالبہ کیا کہ حکومت فی الفور علامہ امین شہیدی کے خلاف درج جھوٹی ایف آئی آر واپس لے کر تمام گر فتا ر کارکنان کو رہا کرے اور قائد وحدت مرکزی سیکریٹری جنرل علامہ ناصر عبا س جعفری کو سیکورٹی فراہم کرے۔

وحدت نیوز(ایبٹ آباد) مجلس وحدت مسلمین ایبٹ آباد کے سیکرٹری جنرل سید مدثر علی کاظمی نے ضلعی کابینہ تحلیل کرکے تین رکنی آرگنائزنگ کمیٹی تشکیل دے دی۔ ذرائع کے مطابق خیبرپختونخوا کے ڈویژن ہزارہ کے صدر مقام ایبٹ آباد میں مجلس وحدت مسلمین کا سیٹ اپ غیر فعال ہونے کی بناء پر تحلیل کیا گیا، اراکین کابینہ کی عدم دلچسپی اور متحرک کردار ادا نہ کرنے کے باعث سیکرٹری جنرل ایبٹ آباد سید مدثر علی کاظمی سخت نالاں تھے، ضلع میں تنظیم کے امور کو چلانے اور نئی باصلاحیت کابینہ کے چناو کے لئے تین رکنی کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے جس میں حجۃ الاسلام علامہ جہانزیب جعفری، سید علی حسیب کاظمی اور سید اظہر حسین شاہ شامل ہیں۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) مفتی امان اللہ کے قتل پر پنجاب حکومت راولپنڈی اسلام آباد میں فرقہ واریت پھیلانے کی سازش کررہی ہے۔انقلاب مارچ کی بڑھتی ہوئی کامیابیوں سے حکومت بوکھلا گئی ہے اور نواز حکومت کی بنیادوں میں دراڑیں پڑچکی ہیں جو کسی بھی وقت زمین بوس ہوسکتی ہے۔حکومت کاوحدت مسلمین کے مرکزی رہنما کے خلاف جھوٹی ایف آئی آر درج کرنا انقلابیوں کے دھرنے کو سبوتاژ کرنے کی ناکام کوشش ہے جس میں انہیں ذلت و خواری کے علاوہ کچھ ہاتھ نہیں لگے گا۔

 

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین صوبہ سندھ کے رہنما مولانانشان حیدر ساجدی نے کراچی ڈویژن کے ذمہ داران سے خطاب کرتے ہوئے کہا۔ انہوں نے کہا کہ مفتی امان اللہ کا قتل پنجاب حکومت کی ایماء پر کیا گیا ہے جس کا مقصد جڑواں شہروں میں فرقہ واریت کی آگ لگاکر دھرنوں سے عوام کی توجہ ہٹانا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت انتقامی کاروائیوں پر اتر آئی ہے اور کالعدم جماعتوں کی حمایت سے اپنے اقتدار کو بچانا چاہتی ہے جس میں انہیں کامیابی حاصل نہیں ہوگی۔ ملک عزیز میں اسلامی بھائی چارے اور وحدت کو فروغ دینے والے علماء پر اس قسم کے جھوٹے مقدمات کا مقصد ملک میں افرا تفری اور فرقہ واریت کو فروغ دینے کے مترادف ہے۔انہوں نے خبردار کیا کہ ملک دشمن رویے کو ترک کرتے ہوئے امام بارگاہ اور اس کے اندر رکھے قرآن نذر آتش کرنے والے دہشتگردوں کو گرفتار کر کے سخت سے سخت سزا دی جائے ۔

وحدت نیوز (کوئٹہ) مجلس وحدت مسلمین بلوچستان کے سیکریٹری جنرل علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا ہے کہ نواز لیگ نے تین صوبوں کے عوام کو نظر اندازکرکے پنجاب کو اپنی سیاست کا محور بنایا مگر اب پنجاب ہی کے عوام نواز حکومت کے خلاف میدان میں آئے ہیں، اب نوازحکومت کا مستقبل تاریک ہے۔ گو نواز گو کا نعرہ ملکی سرحدیں عبور کر کے لندن تک جا پہنچا ہے اب یہ نعرہ ہر جگہ حکمرانوں کا پیچھا کر رہا ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ حکومت پنجاب کی جانب سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری کی سیکورٹی واپس کرنا افسوس ناک انتقامی پالیسی ہے، اگر انہیں کچھ بھی ہوا تو اس کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر ہوگی۔ مقدمات کا اندراج، دفاتر پر چھاپے، کارکنوں کی گرفتاریاں، اور اب سیکورٹی واپس لینا نواز حکومت کی انتقامی کاروائیوں کا تسلسل ہے۔

 

انہوں نے کہا کہ ملک میں نئے صوبوں کا قیام حساس اشو ہے، جس میں یک طرفہ اقدام ممکن نہیں۔ قوموں کے درمیان نفرت کی بجائے اخوت کا پیغام عام کیا جائے۔ سندھ کی تقسیم ہو یا کسی نئے صوبے کا قیام عوام کی رائے اور تاریخی پس منظر مد نظررکھاجائے۔

 

انہوں نے مطالبہ کیا کہ انتخابی اصلاحات میں متناسب نمائندگی کے نظام کو پیش نظر رکھا جائے۔ دنیا کے اسی سے زائد ممالک میں متناسب نمائندگی کا نظام رائج ہے۔ جس میں بہتر امیدوار سامنے آتے ہیں۔ ملک کی متعدد جماعتیں باضابطہ طور پر متناسب نمائندگی کا مطالبہ کر چکی ہیں۔ مجلس وحدت مسلمین ملک میں متناسب نمائندگی کا نظام ضروری سمجھتی ہے، اس سلسلے میں ملکی سطح پر ہم فکر جماعتوں کے ساتھ مل جدوجہد کی جائے گی۔

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree