The Latest

وحدت نیوز(سکردو) صوبائی سکریٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین آغا علی رضوی نے یوم القدس کی عظیم الشان ریلی سے خطاب کرتے ہیں کہا کہ امریکا اور اسرائیل کے مظالم کا آغاز ہوچکا ہے، عالمی استکباری طاقتوں بالخصوص امریکہ اور اسکی ناجائز اولاد اسرائیل اپنی تمام تر کوششوں کے باوجود شام ، عراق ، یمن ، لبنان اور فلسطین میں شکست کھا کر ہزیمت اٹھانے پر مجبور ہیں۔ مشرق وسطی کے جن کمزور ممالک پر سات دہائیوں سے مظالم کے پہاڑ ڈھاتے رہے اب انہی ممالک سے غاصب ریاست کو جوابی حملوں میں جدید میزائلوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ پوری دنیا جانتی ہے مقاومتی بلاک کی سرپرستی قوت ایمانی سے سرشار بابصیرت قیادت کررہی ہے جو دنیا بھر کے مظلومین کو عزم و ہمت عطا کرنے میں اپنی مثال نہیں رکھتا۔ مجلس وحدت مسلمین کے بیباک قائد نے کہا کہ یوم القدس دنیا بھر کے مظلوموں کی داد رسی اور ظالم و جابر حکمرانوں اور ریاستوں کیخلاف آواز بلند کرنے کے حوالے سے ایک شاہکار استعارہ ہے۔

 اپنے خطاب میں انہوں نے ملکی اور گلگت بلتستان کے اہم امور پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم گلگت بلتستان کو با اختیار سیٹ اپ کے وعدے پر حکومت وقت کیساتھ سیٹ ایڈجسٹمنٹ پر راضی ہوئے ، علاقے کے محکوم عوام کی امنگوں کیمطابق با اختیار سیٹ اپ کے اس وعدے کو ہر حال میں عملی جامہ پہنانا ہمارا ہدف ہے جس سے کسی صورت ہم پیچھے نہیں ہٹنے والے۔ وزیر اعظم پاکستان کیطرفسے گلگت بلتستان کیلئے اسپیشل پیکیج کا ہم خیر مقدم کرتے ہوئے امید کرتے ہیں کہ یہ اعلان اعلان کی حد تک نہیں رہنا چاہئے۔ عملدرآمد کرنا حکومت کی زمہداری ہے اور ہم ہر صورت ان اعلانات کو عملی ہوتا ہوا دیکھنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ گلگت بلتستان کا موجودہ وزیر اعلی باصلاحیت ، قابل اور با اعتماد شخصیت کے مالک ہیں ان سے بہت ساری امیدیں وابستہ ہیں کہ وہ علاقے اور عوام کی تعمیر و ترقی کیلئے ہر ممکنہ کوشش کرنے سے دریغ نہیں کرینگے۔ آغا علی رضوی نے یہ بھی واضح کیا عوام اور علاقے کیساتھ کئے گیے ہر وعدے کو عملی جامہ پہنانا لازمی ہے، کسی صورت بھی عوام سے خیانت کی گنجائش نہیں، بلتستان خصوصا سکردو کے مسائل و مشکلات کا جلد از جلد حل نکالنے کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انتظامیہ لاوڈشیڈنگ کے خاتمے کیلئے کردار ادا کریں ، یونیورسٹی کے اندر میرٹ کیخلاف سفارش اور اقربا پروری کی داستانیں سننے کو مل رہی ہیں، ہم ایسا ہرگز برداشت نہیں کریں گے، شہر میں سڑکوں کی معیاری تعمیر کو یقینی بنائی جائے ایسا نہ ہونے کی صورت میں ٹھیکیداروں کیخلاف ہر حد تک جاییں گے۔ اپنی تقریر میں آغا علی رضوی نے مزید کہا کہ بلتستان ڈویژن کے وزرا وزارتوں پر خوش باش ہوکر مطمئن نا ہوں ، علاقے اور عوام کی مشکلات کیلئے کردار ادا کرنا انکا فریضہ ہے۔

دوران خطابت انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کے علمائے کرام اور ملی تنظیمیں مسایل کے حل اور عوامی امنگوں کی ترجمانی کیلئے اسی طرح ہم آواز ہو جائیں جس طرح اس یوم القدس کی ریلی اور جلسے میں سب ایک خوبصورت لڑی میں جمع ہوگئے ہیں۔ اگر ہم اتحاد و اتفاق کیساتھ معاملات پر ایک ہوجائیں تو حکومت اور انتظامیہ سمیت کسی میں ہمت نہیں ہوگی کہ علاقے کے مسائل پر سستی کا مظاہرہ کرے۔

واضح رہے رمضان المبارک کے آخری جمعے جمعتہ الوداع کو کہ بفرمان امام خمینی یوم القدس کے عنوان سے منایا گیا۔ مرکزی امامیہ جامع مسجد سکردو سے برآمد ہونے والی احتجاجی ریلی میں ہزاروں روزے دار بھرپور جوش و جذبے کیساتھ شریک ہوئے۔ ملی تنظیموں نے انجمن امامیہ کے زیر انتظام یوم القدس کی اس عظیم الشان ریلی اور جلسے کو بھرپور انداز میں کامیاب بنانے میں اپنا کردار ادا کیا۔ جلسے سے سکریٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم آغا علی رضوی کے علاؤہ انجمن امامیہ کی نمائندگی کرتے ہوئے حجت الاسلام آغا باقر الحسینی ، شیعہ علماء کونسل کے مولانا شبیر حافظی ، تحریک بیداری کے شیخ عارف تایبی، آئی ایس او بلتستان ڈویژن کی نمایندگی کرتے ہوئے سابق ڈویژنل صدر وقار روش نے خطاب کئے۔

ریلی کی قیادت علمائے کرام نے جبکہ آئی ایس او، ایم ڈبلیو ایم ، جے ایس او ، شیعہ علماء کونسل ، تحریک بیداری اور امامیہ آرگنائزیشن کیطرفسے انتظامات  کئے گئے۔ جلسے کے آخر میں آغا باقر الحسینی نائب امام جمعہ نے متفقہ قرار داد پیش کی اور احتجاجا امریکہ و اسرائیل کے پرچم نذر آتش کردئیے گئے۔

وحدت نیوز(سکردو)رہنما مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان و صوبائی وزیر زراعت گلگت بلتستان محمد کاظم میثم نے عالمی یوم القدس کے موقع پر اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ مسئلہ فلسطین کو علاقائی، مسلکی اور سیاسی مسئلہ بناکر پیش کرنے کی تمام تر سازشیں ناکام ہوگئی ہیں۔ یہ عالمی اور انسانی مسئلہ بن چکا ہے۔ فلسطین کا مسئلہ دنیا کی نام نہاد انسانی حقوق کی تنظیموں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے۔ رواں انسانی تاریخ کا نہ ختم ہونے والے مظالم کا سلسلہ اور بڑی انسانی نقل مکانی جیسے انسانیت سوز واقعات مسئلہ فلسطین سے مربوط ہے۔ مسئلہ فلسطین اور کشمیر عالمی برادری کی انسانیت اور ضمیر کو جھنجھوڑنے کے لیے کافی ہے۔

آج پوری دنیا میں یوم القدس منانے کا مقصد دنیا کے مستضعفین کی حمایت کرنا ہے۔ ان میں سرفہرست فلسطین کے مظلوم عوام ہیں۔ امریکہ اسرائیل اور دیگر اسکتباری طاقتوں کے مظالم فلسطینی مزاحمتی بلاک کے سامنے دم توڑ رہے ہیں۔ ڈیل آف دی سنچری کی ناکامی کے بعد واضح ہوچکا ہے کہ اب فلسطینی عوام کو سازش اور طاقت سے نہیں ہرایا جاسکتا۔ فلسطینی مزاحمت کے نتیجے میں گریٹر اسرائیل کا خواب اور دجلہ سے فرات تک ک خواب دیکھنے والا ملک اپنے آپ کو غیرمحفوظ تسلیم کرچکا ہے۔ اب اسرائیل دنیا کے مستکبرین کے لیے جائے امان نہیں رہا ہے۔ اور یہ بات بھی انتہائی افسوسناک ہے کہ عالم اسلام نے فلسطینی عوام کا ساتھ دینے میں لیت و لعل سے کام لیا بلکہ بعض عرب ریاستیں آج بھی اسرائیل کی ہمنوائی کر رہی ہے۔  پاکستان روز اول سے ہی مسئلہ فلسطین کو اپنا مسئلہ سمجھتا رہا ہے۔

عرب تقسیم سے قبل مصور پاکستان علامہ محمد اقبال اور قائد اعظم محمد علی جناح کا موقف دو ٹوک اور واضح تھا کہ دونوں شخصیات اسرائیل کو غاصب سمجھتی تھیں۔ یہی وجہ ہے کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی کا اصول بھی اسرائیل کو تسلیم نہ کرنے اور فلسطینی عوام کی حمایت کرنے پر قائم ہے۔ اسرائیل اپنی تمام تر عیاریوں مکاریوں اور دغا بازیوں کے باوجود فلسطینی مزاحمت کے سامنے پے درپے شکست سے دوچار ہو رہا ہے۔ کئی کلومیٹر کی غزہ کی پٹی، فلسطین کے بیدار عوام اور چند ہزار حماس کے جوانوں کے سامنے گٹھنے ٹیکنے پر مجبور ہوچکا ہے اور ہر جارحیت کا جواب ملنے پر یہ سوچنے پر مجبور ہوچکا ہے کہ فلسطینی عوام کو طاقت سے ختم نہیں کیا جاسکتا۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصرعباس جعفری نے سینئر تنظیمی ساتھی ،سابق سیکریٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین ضلع ملیر کراچی سجاد اکبرزیدی کی اہلیہ محترمہ سیدہ شاہین رضوی کے انتقال پر تعزیت اور افسوس کا اظہار کیا ہے ۔

مرکزی سیکریٹریٹ سے جاری اپنے ےتعزیتی پیغام میں انہوںنے کہا کہ برادر عزیز سید سجاد اکبر زیدی کی اہلیہ محترمہ کے بارضائے الہی دارالفناء سے دارالبقاء کی جانب کوچ کرجانے کی خبر سن کر دلی افسوس ہوا، خدا وند متعال مرحومہ کی مغفرت فرمائے، انہیں جوار جناب شہزادی کونین علیہ السلام میں محشور فرمائے، برادر سجاد اکبرسمیت ان کی صاحبزادیوں اور دیگر پسماندگان کو اپنی بارگاہ عالیہ سے صابرین کیلئے موجود عظیم اجر عنایت فرمائے ۔

وحدت نیوز(اسلام آباد) پاکستان کے زیر اہتمام جمعہ الوداع ملک گیر یوم القدس ریلیوں کا انعقاد ۔چاروں صوبوں وفاقی دارلحکومت،سمیت کشمیر گلگت بلتستان کے تمام اضلاع اور شہروں، قصبوں اور ملک کے قریہ قریہ میں قبلہ اول کی آزادی کے لئے احتجاجی مظاہرے و ریلیاں نکالی گئیں۔

 اسلام آباد میں مجلس وحدت مسلمین، امامیہ سٹوڈنٹس آرگنائزیشن اور ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام امام بارگاہ اثنا عشری جی سکس ٹو سے ڈی چوک تک عالمی القدس و یکجہتی فلسطین کارو بائیک ریلی نکالی گئی جس کا مقصد القدس کی آزادی اور کشمیر و فلسطین سمیت مظلومین جہاں سے اظہار یکجہتی کرنا تھا۔ریلی کی قیادت مرکزی قائدڈپٹی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم ناصر عبا س شیراز ی ،ملی یکجہتی کے ڈاکٹر ثاقب اکبر، آئی ایس او کے مرکزی رہنما برادر اشترعلی نے کی ، ریلی میں مرکزی ، صوبائی اور ضلعی رہنماں سمیت کارکنان کی بڑی تعداد موجود تھی،ریلی میں شرکا نے موٹر سائیکلوں اور کاروں پر سوار ہو کر شرکت کی۔ قائدین کی طرف سے ایس او پیز کو یقینی بنانے کی ہدایات پر پوری ذمہ داری کے ساتھ عمل کیا گیا۔

ریلی کے شرکاء نےپلے کارڈ اور بینرز بھی اٹھا رکھے تھے جن پر اسرائیل اور عالمی استکباری طاقتوں کے خلاف نعرے درج تھے۔ مقررین نے عالم اسلام سے مطالبہ کیا کہ وہ القدس کی آزادی کے لیے اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔ مجلس وحدت مسلمین کے مرکزی رہنما ناصر عباس شیرازی نے خطاب کرتے ہوئے کہا القدس کی آزادی بہت قریب ہے۔غاصب اسرائیل کی بربادی وہ نوشتہ دیوار ہے جسے کوئی مٹا نہیں سکتا۔القدس کی آزادی کے لیے فلسطینی قوم نے اپنے عزم، حوصلے اور استقامت سے اسرائیل کو اعصابی طور پر شکست دے دی ہے۔

انہوں نے کہا کہ مسلمان حکمران اگر غیرت و حمیت کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے قبلہ اول پر چڑھائی کرنے والوں سے جرات مندانہ انداز اختیار کرتے تو آج فلسطین کا نقشہ مختلف ہوتا۔اپنی بقا کے لیے فلسطین کے مسلمانوں نے ایک طویل اور صبر آزما جنگ لڑی ہے۔ جن مسلمان حکمرانوں نے اپنے اسلامی نظریات پر اسرائیل و امریکہ کی تابعداری کو مقدم رکھا ہے تاریخ ان کی اس سیاہ کاری کو کبھی معاف نہیں کرے گی۔دنیا بھر کے باشعور و با ضمیر افراد یوم القدس کے موقع پر مظلوم کی حمایت اور ظالمین سے اپنی نفرت کا برملا اظہار کرتے ہیں۔

ملی یکجہتی کونسل کے مرکزی رہنما ڈاکٹر ثاقب اکبر نے ریلی سے اپنے خطاب میں نے کہاکہ عالم کفر کے مقابلے میں عالم اسلام کے مجتمع ہونے کا وقت آن پہنچا ہے۔آج اگر امت مسلمہ باہم ہوتی تو فرانس سمیت کسی بھی ملک کو ختمی مرتبت حضرت محمد ? اللہ علیہ والہ وسلم کے خلاف توہین کی ناپاک جسارت کرنے کی جرات نہ ہوتی۔مسلمان حکمران جب تک ایک دوسرے کے خلاف اپنے دلوں سے بغض وکینہ کو ختم نہیں کرتے تب تک یہود و نصاری ہمیں آنکھیں دکھاتے رہیں گے۔

انہوں نے کہا امام خمینی کے یادگارالفاظ کو دہراتے ہوئے کہا کہ مسلمان ہاتھ باندھنے اور کھولنے کی فکر میں ہیں جب کہ دشمن ہاتھ کاٹنے کی فکر میں ہے۔عالم اسلام کو اپنی سالمیت و بقا کے باہم ہونا ہو گا۔ مسلمانوں کے خلاف عالمی سازشوں کو ناکام بنانے کے لیے ہمارے پاس سب سے موثر اور کارآمد ہتھیار ہمارا” اتحاد“ ہے۔

آئی ایس اور پاکستان کے مرکزی رہنما برادر اشتر علی نے شرکائے ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا میں طاقت کا توازن بڑی تیزی سے تبدیل ہو رہا ہے۔ وہ طاقتیں جو کل تک پوری دنیا پر حکمرانی کے خواب دیکھ رہی تھیں آج اقتصادی طور پر تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہیں۔ اخلاقی تنزلی کے شکار مغربی معاشرے نے خاندانی نظام کو بربادکرکے رکھ دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ اسلام ہی وہ حق و صداقت کا دین ہے جس کا طرز زندگی ہر اعتبار سے مثالی اور قابل تقلید ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہود و نصاری مسلمانوں کے اسلامی تشخص کو داغدار کرنے کے لیے نت نئے ہتھکنڈوں میں مصروف ہیں۔عالمی استعماری ایجنٹ ثقافتی یلغار کے ہتھیار کو استعمال کر کے ہم سے ہمارا اسلامی تشخص چھیننا چاہتے ہیں۔مسلمانوں کی بقا صرف اور صرف اسلامی کی حقیقی تعلیمات میں مضمر ہیں۔ عالم اسلام کو نشانے بنانے والی غاصب طاقتیں ہمیشہ پامال و رسوا ہوتی آئی ہیں۔ گریٹر اسرائیل کا خواب دیکھنے والے اس کی بھیانک تعبیر سے اب لرز رہے ہیں۔ظالمین کا دور اب ختم ہونے والا ہے۔

وحدت نیوز (کراچی) مجلس وحدت مسلمین کی جانب سے ملک بھر کی طرح سندھ بھر کے تمام اضلاع میں رمضان المبارک کا آخری جمعہ یوم القدس کے عنوان سے منایا گیا۔ یوم القدس کے موقع پر سندھ بھر کے اضلاع میں بعد نماز جمعہ فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی اور قبلہ اوّل کی بازیابی کے لئے احتجاجی مظاہرے کئے گئے جبکہ جس میں ایس او پیزکا مکمل خیال رکھا گیا۔

مرکزی احتجاجی مظاہرہ کراچی میں نور ایمان مسجد ناظم آباد کے باہر کیا گیا۔ کراچی میں مرکزی احتجاجی مظاہرے سے ایم ڈبلیو ایم سندھ کے سیکرٹری جنرل علامہ باقر زیدی سمیت،بزرگ عالم دین علامہ مرزایوسف حسین، علامہ صادق جعفری، علامہ علی انور،علامہ ملک عباس، میر تقی ظفر اور دیگر نے خطاب کیا۔

جامعہ مسجد نور ایمان مسجد کے باہر ہونے والے احتجاجی مظاہرے میں سیکڑوں مظاہرین شریک تھے جنہوں نے ہاتھوں میں بینرز اور پلے کارڈز اٹھا رکھے تھے جن پر مردہ باد امریکہ، اسرائیل نامنظور، ہندوستان مردہ باد، فلسطین کی آزادی اور کشمیر کی آزادی پر مبنی نعرے آویزاں تھے جبکہ پنجاب حکومت مردہ باد کے نعرے بھی درج تھے۔ مظاہرین نے فلسطینی و کشمیری عوام سے یکجہتی کرتے ہوئے امریکی و اسرائیلی پرچموں سمیت بھارتی پرچم کو بھی نذر آتش کیا۔ احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے علامہ باقر زیدی نے کہا کہ فلسطین کی آزادی قریب ہے اور عنقریب قبلہ اوّل صہیونیوں کے شکنجہ سے آزاد ہو گا۔

 ان کا کہنا تھا امریکہ فلسطین اور کشمیر میں صہیونی و بھارتی مظالم کی سرپرستی کر رہا ہے اور خطے میں بد امنی پھیلا کر مسلم ممالک کو کمزور کرنا چاہتا ہے جبکہ پاکستان کو غیر مستحکم کرنے کی گھناؤنی سازش پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یوم القدس مظلوموں کی حمایت اور مسلمان اقوام کے مابین اتحاد و یکجہتی کا بے مثال دن ہے۔

 اس موقع پر انہوں نے ایران میں اسلامی انقلاب کے بانی امام خمینی اور پاکستان کے بانی قائد اعظم محمد علی جناح کو زبردست خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ دنیا کو اسرائیل کے سنگین خطرے سے بروقت متنبہ کیا تھا اور آج پوری دنیا اسرائیل کی دہشتگردانہ سوچ کا نشانہ بن رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر و فلسطین میں ہونے والے ظلم و ستم پر خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ ان کا کہنا تھا عالمی برادری دوہرا معیار ترک کرے اور مسئلہ فلسطین اور کشمیر کو عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرنے میں مثبت کردار ادا کرے۔

انہوں نے پنجاب میں عزاداروں کے خلاف بے بنیاد مقدمات قائم کرنے پر وزیر اعلیٰ پنجاب کی شدید الفاظ میں مذمت کی اور کہا کہ عثمان بزدار ہوش کے ناخن لیں اور پنجاب میں ملت جعفریہ کے خلاف جاری تعصبانہ اقدامات کو فی الفور بند کریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم پاکستان عمران خان پنجاب حکومت کے متعصبانہ اور ظالمانہ رویہ کا نوٹس میں بصورت دیگر احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔ اس موقع پر شرکاء نے عثمان بزدار مردہ باد اور پنجاب حکومت مردہ باد کے نعرے لگائے۔


وحدت نیوز(کوئٹہ)جمعۃ الوداع عالمی یوم القدس کے موقع پر آج کوئٹہ میں مظلوم فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کیلئے احتجاجی مظاہرہ کیا گیا مظاہرے سے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنما علامہ سید ہاشم موسوی بزرگ عالم دین امام جمعہ کوئٹہ علامہ محمد جمعہ اسدی اور مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ترجمان علامہ مقصود علی ڈومکی نے خطاب کیا۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے علامہ مقصود علی ڈومکی نے کہا کہ پوری دنیا کے مسلمان آج مظلوم فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے یوم القدس منا رہے ہیں قدس کے وارث دنیا کے ڈیڑھ ارب مسلمان ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل غاصب اور جعلی ریاست ہے جسے دنیا کے غیرت مند مسلمان اور اقوام عالم تسلیم کرنے کے لیے تیار نہیں ہیں۔ عرب حکمران اگر بیت المقدس اور قبلہ اول کا سودا کرتے ہوئے امت مسلمہ سے خیانت کے مرتکب ہو رہے ہیں م تو یہ ان ممالک کے عوام کا فیصلہ نہیں ہے بلکہ غیر منتخب غیر جمہوری اور ناجائز حکمرانوں کا فیصلہ ہے جو اسرائیل اور امریکہ کے سامنے سجدہ ریز ہو چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسرائیل آج تاریخ کی کمزور ترین پوزیشن پر ہے۔ جب کہ آزادی کے بیت المقدس کے لئے فلسطینیوں کے شانہ بشانہ دنیا بھر کے غیرت مند مسلمان قربانی دے رہے ہیں کویٹہ کے عظیم شہدا ءجنہوں نے یوم القدس کے موقع پر اپنے لہو کا نذرانہ پیش کیا ان کے مشن کو جاری رکھیں گے۔

علامہ سید ہاشم موسوی نے کہا کہ مسئلہ فلسطین عالم اسلام کا اصلی اور حقیقی مسئلہ ہے. 70سال سے فلسطینی عوام نے مسلسل استقامت اور قربانیوں سے اس مسئلہ کو اجاگر کیا ہوا ہے۔امام خمینیؒ کے فرمان کے مطابق ہر سال کی طرح امسال بھی یوم القدس منایا جا رہا ہے۔

علامہ محمد جمعہ اسدی نے کہا کہ ہم مظلوم فلسطینیوں کی حمایت کسی صورت میں نہیں چھوڑ سکتے۔اس مشکل صورتحال میں ظالموں کے شکنجے میں پھنسے مظلوموں کی حمایت کےلئے اپنا شرعی وظیفہ سمجھ کر انجام دیں۔اسرائیل کی مخالفت پاکستانیوں کی بنیادی آئیڈیالوجی ہے کیونکہ بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح نے کہا تھا اسرائیل ایک ناجائز ریاست ہے جسے ہم قبول نہیں کرتے ہیں۔

وحدت نیوز(کراچی)مجلس وحدت مسلمین سندھ کے سیکرٹری جنرل علامہ باقر عباس زیدی کا کہنا ہے کہ ماہ رمضان المبارک میں ہر سال آخری جمعہ کو اسلامی انقلاب کے بانی حضرت امام خمینیؒ کے فرمان کے مطابق دنیا بھر میں یوم القدس منایا جاتا ہے، یوم القدس ایک ایسا تاریخی موقع ہے کہ جو نہ صرف فلسطینی مظلوم عوام سے مناسبت رکھتا ہے، بلکہ دنیا کی تمام مظلوم اقوام کے حق کی بات کرتا ہے، اس عنوان سے ایم ڈبلیو ایم پاکستان کی جانب سے ملک بھر میں یکجہتی فلسطین اور عالمی یوم القدس کی مناسبت سے پروگرامات منعقد کئے جاتے ہیں،

انہوں نے کہا کہ مجلس وحدت مسلمین سندھ کی جانب سے جمعۃ الوداع یکجہتی فلسطین اور یوم القدس کے حوالے سے سندھ بھر میں جمعہ اجتماعات کے بعد احتجاجی مظاہرے و ریلیاں نکالی جائیں گی، کراچی میں مرکزی احتجاجی مظاہرہ جامع مسجد نور ایمان ناظم اباد کے باہر منعقد کیا جائے گا۔

کراچی پریس کلب میں دیگر رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے علامہ باقر زیدی نے کہا ہے کہ القدس مسلم امہ کے اتحاد کا مظہر ہے، پوری امت کا اتحاد وقت کی اہم ضرورت ہے، مسئلہ فلسطین تاریخ کے سنگین دور سے گزر رہا ہے، دنیا میں پھیلی کورونا وبا کے باعث جہاں کئی ایک اور مسائل نے جنم لیا ہے، وہاں مسئلہ فلسطین کو بھی پس پشت ڈال دینے کی ہر ممکنہ کوشش کی جا رہی ہے، پہلے کی نسبت آج فلسطین کاز کے خلاف اندرونی و بیرونی دشمن سرگرم ہوچکے ہیں، امریکا، اسرائیل، ہندوستان اور ان کے دوست پاکستان کے خلاف سازشوں میں مصروف عمل ہیں، کشمیر میں مظلوم عوام انصاف کی راہ تک رہے ہیں۔

رہنماؤں نے پنجاب حکومت کی جانب سے عزاداروں کے خلاف متعصبانہ کارروائیوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت ہوش کے ناخن لے اور عزاداروں کے خلاف متعصبانہ کارروائیوں کو فی الفور بند کیا جائے اور گرفتار افراد کو رہا کیا جائے۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے یوم القدس کے موقع پر اپنے پیغام میں کہا ہے کہ جب تک اسرائیل کا ناپاک وجود کرہ ارض پر موجود ہے تب تک دنیا پر تیسری عالمی جنگ کے خطرات منڈلاتے رہیں گے۔ گریٹر اسرائیل کے خواب دیکھنے والی اس غاصب ریاست پر تباہی کے بادل منڈلانے شروع ہو گئے ہیں۔مسلمانوں کے قبلہ اول کی آزادی ہماری نئی نسل خود اپنی آنکھوں سے دیکھے گی۔

 انہوں نے کہا کہ انقلاب ایران سے قبل مسئلہ فلسطین کے ساتھ  مسلمان حکمران غیر سنجیدگی ظاہر کرتے رہے ہیں۔ امام خمینی نے پوری دنیا میں یوم القدس منانے کا اعلان کر کے نہ صرف فلسطینی قوم کے عزم واستقامت کو تقویت دی ہے بلکہ اسرائیل اور اس کے حواریوں کی صفوں میں خوف پیدا کیا ہے۔ایک محدود زمینی ٹکرے کو یہود و نصاری مل کر گریٹر اسرائیل میں بدلنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگانے میں مصروف ہیں۔فلسطینی مسلمانوں کی بھرپور مزاحمت اور بلند حوصلوں نے اسرائیل کو پسپا کر رکھا ہے۔فلسطینی مسلمان اور ان کا ساتھ دینے والی عالمی طاقتوں کی بصیرت و حکمت کے نتیجے میں ڈیل آف سنچری کسی لاغر نومولود کی طرح اپنے ابتدائی ایام میں ہی دم توڑ گئی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ خدا کی غیبی طاقت ان مسلمانوں کا ساتھ دے رہی ہے جو باطل کے مقابلے میں ڈٹ کر حق کے ساتھ کھڑے ہیں۔اسرائیل کی تباہی کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔دنیا کے ممتاز کاروباری اسرائیل کو چھوڑ کر اپنی ریاستوں میں واپس پلٹ رہے ہیں۔اسرائیل پہلے صرف ایران کو اپنے لیے خطرہ سمجھتا لیکن اب یمن سمیت دیگر اسلامی ریاستوں کے خوف نے اس کو ہواس باختہ کر دیا ہے۔انہوں نے کہا عالم اسلام کے حکمران یوم القدس کو سرکاری دن کے طور پر منانے کا اعلان کر کے قبلہ اول سے اپنی وابستگی کا اظہار کریں۔

وحدت نیوز (اسلام آباد) مجلس وحدت مسلمین اور ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام "قبلہ اول کی آزادی قریب ہے" کے عنوان سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے کہا ہے کہ انقلاب ایران سے قبل مسئلہ فلسطین کے ساتھ مسلمان حکمران غیر سنجیدگی ظاہر کرتے رہے ہیں۔ امام خمینی نے اس مسئلے میں جان پیدا کی۔اسرائیل غاصب اپنے ابتدائی مراحل میں بالکل چھوٹا سا تھا۔یہود و نصاری اسے گریٹر اسرائیل میں بدلنے کے لیے ایڑی چوٹی کا زور لگانے میں مصروف ہیں۔فلسطینی مسلمانوں کی استقامت اور عوامی مزاحمت نے اسرائیل کو خوفزدہ کر رکھا ہے۔یہی وجہ ہے کہ ڈیل آف سنچری کو ناکامی کی خجالت اٹھانا پڑی۔اسرائیل کی تباہی کا سلسلہ شروع ہو چکا ہے۔جو کاروباری شخصیات روشن مستقبل کی خاطر اسرائیل میں ڈیرہ لگائے ہوئے تھے وہ اپنے اپنی ریاستوں میں واپس پلٹ رہے ہیں۔اسرائیل نے کچھ دن پہلےبیان دیا ہے کہ ہمیں یمن کے بلیسٹک میزائلوں سے خطرہ ہے یہ صیہونیوں کے خوف کو آشکار کر رہا ہے۔

سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انسانی حقوق کی وفاقی وزیر شیریں مزاری نے کہا ہے کہ القدس کا دن بہت اہم ہے جب تک فلسطینیوں کو ان کا حق نہیں ملتا تب تک اسرائیل کو تسلیم کرنے کا سوال ہی نہیں پیدا ہوتا۔ او آئی سی کے قیام کا مقصد القدس کی آزادی کے لیے جدوجہد کرنا تھی لیکن آج او آئی سی خاموش بیٹھی ہے۔فلسطین کے مسئلے پرپاکستان کی حکومت کا موقف ہمیشہ اٹل اور اصولی رہا ہے۔اگر فلسطین کے مسئلے پر ہم لچک دکھاتے ہیں تو پھر کشمیر پر بھی ہمارا موقف جاندار نہیں رہے گا۔

القدس سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے اسلامی نظریاتی کونسل کے چیئرمین قبلہ ایاز صادق نے اپنے خطاب میں کہا کہ مسئلہ فلسطین عالمی امن کے اداروں کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ۔ ہزاروں لوگ شہید ہوئے اورہزاروں فلسطینی اسرائیل کی قیدو بند کی صعوبتیں برداشت کر رہے ہیں۔ اور یہ سلسلہ مسلسل جاری ہے ۔ لیکن اقوام متحدہ ، او آئی سی سمیت نام نہاد امن کے علمبردار ممالک ان مظلومین کی حمایت کی بجائے خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں امت مسلمہ کو مسئلہ فلسطین پر ایران لبنا ن کی طرح ایک جاندار اور واضح موقف اپنا نا ہو گا۔

سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے سینئرصحافی مظہر برلاس نے کہا کہ کچھ اسلامی ملک صیہونی شدت پسند جماعتوں کی فلسطینی مسلمانوں کے خلاف حمایت کر رہے ہیں ۔ اپنے مفادات کو مقدم سمجھتے ہوئے اسرائیل کی طرف دوستی کا ہاتھ بڑھا رہے ہیں جو شرمناک ہے۔جب تک ہمارے اندر اتحاد نہیں ہوتا تب تک ہم حقیقی معنوں میں مسلم امہ کہلانے کے حقدار نہیں ۔

سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی سیکرٹری جنرل ایم ڈبلیو ایم ناصر عباس شیرازی نے کہا کہ مشرق وسطی میں بد امنی کی سب سے بڑی وجہ اسرائیل اور اس کے حمایتیوں کی پالیسیاں ہیں ۔ عالمی اسلام کو اصل خطرہ ان نام نہاد اسلامی ممالک سے ہے جو اسرائیل کی محبت میں اس قدر گرفتار ہو چکے ہیں کہ اپنے ہی مسلمان بھائیوں پر ظلم کرنے سے بھی گریز نہیں کر رہے ۔یمن کی جنگ میں پاکستان نہ حصہ بنا ہے اور نہ بننا چاہئیے۔کانفرنس سے جماعت اسلامی کے رہنما لیاقت بلوچ، ملی یکجہتی کونسل کے جناب ثاقب اکبر ،پیپلز پارٹی کے رہنما فرحت اللہ بابر،ملی یکجہتی کونسل کے قبلہ ایاز، جناب لیاقت بلوچ ، گلزار نعیمی اور ایم ڈبلیو ایم کے علامہ اقبال بہشتی و دیگر مذہبی و سیاسی رہنماؤں نے خطاب کیا۔

وحدت نیوز (لاہور) دنیائے اسلام کو مسئلہ فلسطین کی طرف متوجہ کرنے کے لیے امام خمینی رحمۃ اللہ علیہ نے ماہ رمضان کے آخری جمعہ کو یوم القدس منانے کی اپیل کی  جس کے نتیجے میں آج دنیا کے گوشے گوشے سے امریکہ، اسرائیل، صہیونیت، استکبار و استعمار مردہ باد کی آوازیں بلند ہوتی ہیں، آج ہر باشعور مسلمان یہ کہتا ہے کہ مسئلہ فلسطین اور بیت المقدس فقط عربوں کا مسئلہ نہیں ہے، بیت المقدس کی آزادی صرف فلسطینوں کا مسئلہ نہیں ہے بلکہ یہ اسلام کا ایک اہم و بنیادی مسئلہ ہے کہ جس کو ظلم و جبر سے ختم نہیں کیا جاسکتا۔ ان خیالات کا اظہار ایم ڈبلیو ایم شعبہ خواتین کی مرکزی سیکرٹری جنرل و رکن پنجاب اسمبلی سیدہ زہرا نقوی نے عالمی یوم القدس کی مناسبت سے میڈیا سیل سے جاری ایک بیان میں کیا۔

 ان کا کہنا تھا فلسطین وہ مبارک سرزمین ہے جس کی جانب رخ فرما کر رسول اکرم (ص) نے اپنے اصحاب و انصار کے ہمراہ نمازیں ادا کی ہیں، یہ وہ سرزمین ہے جہاں سے نبی کریم (ص) نے سفر معراج انجام دیا، فلسطین کی آزادی تک مسلمانوں کو اسلام ناب حاصل نہیں  ہوگا اگر عالم اسلام امن و امان کا خواہش مند ہے تو انہیں فوراً فلسطین کی آزادی کے لئے صف بستہ ہونا ہوگا۔

انہوں نے کہا روز قدس  پورے عالم اسلام کا دن ہے ، اسلام کا دن ہے قرآن کا دن ہے اور اسلامی حکومت اور اسلامی انقلاب کا دن ہے ۔اسلامی اتحاد اور اسلامی یکجہتی کا دن ہے ان کا مزید کہنا تھا دشمن مذہب و مسلک اور قومی و لسانی تفرقے ایجاد کرکے اسلامی وحدت کو پارہ پارہ کررہا ہے اب بھی وقت ہے کہ مسلمان ملتیں ہوش میں آئیں اور اسلامی بیداری و آگاہی سے کام لے کر ، فلسطینی مجاہدین کے ساتھ اپنی حمایت و پشت پناہی کا اعلان کریں۔

Page 1 of 1116

مجلس وحدت مسلمین پاکستان

مجلس وحدت مسلمین پاکستان ایک سیاسی و مذہبی جماعت ہے جسکا اولین مقصد دین کا احیاء اور مملکت خدادادِ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے عملی کوشش کرنا ہے، اسلامی حکومت کے قیام کے لیے عملی جدوجہد، مختلف ادیان، مذاہب و مسالک کے مابین روابط اور ہم آہنگی کا فروغ، تعلیمات ِقرآن اور محمد وآل محمدعلیہم السلام کی روشنی میں امام حسین علیہ السلام کے ذکر و افکارکا فروغ اوراس کاتحفظ اورامر با لمعروف اور نہی عن المنکرکا احیاء ہمارا نصب العین ہے 


MWM Pakistan Flag

We use cookies to improve our website. Cookies used for the essential operation of this site have already been set. For more information visit our Cookie policy. I accept cookies from this site. Agree